کشمیر میں تمام سٹیک ہولڈرز سے بات کرنے کوتیار ہیں، بھارت

کشمیر میں تمام سٹیک ہولڈرز سے بات کرنے کوتیار ہیں، بھارت

سری نگر (صباح نیوز) بغل میں چھری منہ میں رام رام کے مصداق بھارت کے وزیرِ داخلہ راجناتھ سنگھ نے دعوی کیا ہے کہ وزیرِ اعظم نریندر مودی اور ان کی حکومت کشمیر اور کشمیریوں سے بے پناہ محبت کرتے ہیں اور "ان کی تصویر اور تقدیر بدلنا چاہتے ہیں"۔انہوں نے کہا ہے کہ نئی دہلی کے زیرِ انتظام کشمیر گزشتہ تین دہائیوں سے جس پرآشوب دور سے گزر رہا ہے۔ اسے اس سے باہر نکالنے اور ریاست میں دائمی امن قائم کرنے کے لئے وفاقی حکومت تمام سٹیک ہولڈروں کے ساتھ بات چیت کرنے کے لئے تیار ہے۔سرینگر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے، انھوں نے کہا کہ"بات چیت سب سے ہو سکتی ہے۔ بات چیت کے لئے عقل و شعور والا ہونا ضروری ہے نہ کہ ہم خیال۔ ہم تمام سٹیک ہولڈرز سے بات کرنا چاہتے ہیں اور اسی مقصد کے لئے ہم نے گزشتہ برس کشمیر پر ایک خصوصی نمائندے کا تقرر عمل میں لایا تھا۔" حکومت کے خصوصی نمائندے دنیشور شرما اب تک کشمیر کا 11 مرتبہ دورہ کیا ہے۔ااجناتھ سنگھ شورش زدہ ریاست کے دو روزہ دورے پر ہیں۔ اراجناتھ سنگھ نے کشمیری قیادت پر کشمیری نوجوانوں کو سنگباری پر اکسانے کا الزام عائدکرتے ہوئے کہا کہ وہ خود اپنے بچوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرتے ہیں۔ لیکن عام بچوں کے ہاتھوں میں پتھر تھما کر انہیں تشدد کے راستے پر گامزن کرا دیتے ہیں سنگباری میں حصہ لینے والے کشمیری نوجوانوں کے مستقبل کو بچانے کے لئے حکومت نے نومبر 2017 میں پہلی بار اس کا ارتکاب کرنے والوں کے خلاف دائر کئے گئے مقدمات کو واپس لینے کا فیصلہ کیا اور اب تک ایسے دس ہزار کیس واپس لئے جاچکے ہیں۔کچھ طاقتیں نہیں چاہتیں کہ نئی دہلی کے زیرِ انتظام کشمیر میں امن بحال ہو اور ریاست ترقی کرے۔

مزید : صفحہ آخر