’’پر امن کراچی ‘‘میں تمام سیاسی جماعتوں کیلئے میدان کھلا ہے

’’پر امن کراچی ‘‘میں تمام سیاسی جماعتوں کیلئے میدان کھلا ہے

(تجزیاتی رپورٹ/نعیم الدین)

کراچی میں الیکشن کا ماحول گرم ہوتا دکھائی دے رہا ہے جبکہ اندرون سندھ بھی امیدوار اپنے اپنے حلقوں میں سرگرم ہوگئے ہیں۔ سیاسی جماعتوں نے اپنا ہوم ورک شروع کردیا ہے۔ کاغذات نامزدگی جمع کرانے کا سلسلہ جاری ہے۔ نئے امیدوار بھی میدان میں آرہے ہیں، جن میں ملک کی بڑی سیاسی پارٹی کے سربراہ بلاول بھٹو پہلی بار الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔ جبکہ ماضی کے منتخب امیدوار بھی ایک بار پھر نئے جوش و ولولے کے ساتھ انتخابات میں حصہ لینے کیلئے تیار ہیں۔ دوسری جانب کراچی میں کچھ اہم نام امیدواروں کے طور پر سامنے آرہے ہیں، جن میں تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان بھی شامل ہیں جو این اے 243گلشن اقبال سے الیکشن میں حصہ لیں گے ۔ پی ایس پی کے مصطفی کمال نے قومی اورصوبائی اسمبلی کے دو ،دوحلقوں این اے 247 ، پی ایس 127 ، این اے 253 سے کاغذات نامزدگی حاصل کیے ہیں ۔اس کے علاوہ عمران اسماعیل ، عارف علوی بھی الیکشن میں امیدوار ہونگے۔ اس مرتبہ تحریک انصاف کراچی کی تمام نشستوں پر اپنے امیدوار کھڑے کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ کراچی سے ہی تعلق رکھنے والے پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے لیاری سے الیکشن لڑنے کیلئے فارم جمع کرادیا ہے ، بلاول بھٹو کا سیاسی میدان میں پہلا پاور شو ہوگا، اب دیکھنا یہ ہے کہ لیاری والے ماضی کی طرح پیپلز پارٹی کے ووٹ بینک کو برقرار رکھ سکیں گے یا نہیں ۔ ایسی صورتحال میں نبیل گبول جو کہ اس علاقے میں الیکشن کے معاملے میں چمپئن کہلاتے رہے ہیں، اگر وہ کسی اور علاقے سے لڑے تو کیا وہ اپنا مقام دوبارہ حاصل کرسکیں گے حالانکہ انہوں نے گذشتہ الیکشن میں ایم کیو ایم کے امیدوار کی حیثیت سے عزیز آباد سے الیکشن میں کامیابی حاصل کی تھی ، چونکہ وہ معاملہ کچھ اور تھا، کیونکہ متحدہ کا ’’کھمبا ووٹ‘‘ تھا ، متحدہ کو ووٹ دینے والا شخصیت نہیں بلکہ پارٹی کو ووٹ دیتا رہا ہے۔ اسی طرح لیاری کی عوام ہر دور میں پیپلز پارٹی کے شیدائی رہے ہیں ۔ توقع کی جارہی ہے کہ وہ پیپلز پارٹی کے نوجوان سربراہ کو کامیاب کرانے میں ماضی کی طرح اپنی دلچسپیاں ظاہر کریں گے۔بلاول کی طرح ان کی ہمشیرہ آصفہ بھٹو بھی پہلی مرتبہ انتخابی میدان میں اتریں گی ۔پی ایس پی کے صدر انیس قائم خانی اور ایم کیو ایم پاکستان کے عامر خان نے الیکشن میں حصہ نہ لینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس مرتبہ کراچی کے الیکشن کے نتائج ملک بھر کی سیاست پر گہرے اثرات مرتب کرسکتے ہیں۔ لیکن دلچسپ بات یہ ہے کہ صورتحال قدرے مختلف ہے ، اور نتائج بھی تجزیہ نگاروں کی سوچ سے مختلف ہوسکتے ہیں۔

مزید : کراچی صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...