کراچی ،امن فاؤنڈیشن اوراین آئی سی وی ڈی میں اشتراک

کراچی ،امن فاؤنڈیشن اوراین آئی سی وی ڈی میں اشتراک

کراچی(اسٹاف رپورٹر)نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیو ویسکولر ڈیسیسز(این آئی سی وی ڈی )اور امن فاؤنڈیشن کے درمیان امن ایمبولینس نیٹ ورک کیلئے اشتراک کے حوالے سے معاہدہ طے پاگیا ہے ۔اس معاہدے پر امن فاؤنڈیشن کی جانب سے فاؤنڈیشن ٹرسٹی ڈاکٹرسعدیہ قریشی اور این آئی سی وی ڈی ویلفیئر ٹرسٹ کے ٹرسٹی امین ہاشوانی نے دستخط کئے جبکہ اس موقع پر میڈیا نمائندگان سمیت دونوں اداروں کی اعلیٰ انتظامیہ اور معزیزین شہر بھی موجود تھے ۔این آئی سی وی ڈی کی خواہش ہے کہ سندھ بھر میں اسٹیٹ آف دی آرٹ سہولیات کے ساتھ ایک مربوط ہیلتھ کیئر سسٹم قائم کیا جائے ،ایک عالمی معیار کا مربوط ایمرجنسی میڈیکل سسٹم اس ہیلتھ کیئر ایکو سسٹم کا ایک اہم جز ہے ،امن ایمبولینس اپنے قیام سے اب تک کے مختصر عرصے میں ساڑھے نو لاکھ سے زائد افراد کی جانیں بچا کر اپنی افادیت اور مستعدی ثابت کرچکی ہے ،امن ایمبولینس کے اس شاندار ریکارڈ اور کارکردگی کی بدولت این آئی سی وی ڈی سمجھتی ہے کہ معاشرے تک اپنی خدمات کی تیزتر اور کفایت شعاری کے ساتھ فراہمی میںISO:9001(2015)سرٹیفائیڈ امن ایمبولینس بہترین شراکت دار ثات ہوسکتی ہے ۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے امین ہاشوانی کا کہنا تھا کہ ہم اپنی امن ایمبولینس کی سروس اور این آئی سی وی ڈی جیسے شراکت داروں کے اشتراک سے سندھ بھر میں صحت کے شعبے کی بہتری پر بھرپور یقین رکھتے ہیں،آج دس سال کے بعد کراچی ،ٹھٹھہ اور سجاول میں امن ایمبولینس جیسا جدید ماڈل متعارف کروا کر ہم’’بیسٹ ان ایشیا ایمرجنسی کیئر‘‘ایوارڈ کے حقدار ٹھہرے ہیں اور ہمیں امید ہے کہ ہم مریضوں ں کو اسپتال پہنچانے سے قبل درپیش مسائل کے حوالے سے پائی جانیوالے خلاء کو پر کرنے میں کامیاب رہیں گے ،امن نے اب تک انتہائی شاندار روایت قائم کی ہے اور ہمیں امید ہے کہ یہ روایت مستقبل میں بھی قائم رہے گی ،این آئی سی وی ڈی نے ہمیںیقین دہانی کرائی ہے کہ امن ایمبولینس کا استعمال اپنی روایت کے عین مطابق اور اعلیٰ خدمات کے تحت جاری رہے گا،تقریب سے خطاب کرتے ہوئے امن فاؤنڈیشن کی ٹرسٹی ڈاکٹر سعدیہ قریشی کا کہنا تھا کہ این آئی سی وی ڈی پہلا تخلیقی حکومتی طبی ادارہ ہے جس نے طبی خدمات میں ایکو سسٹم کی اپروچ کو اپنایا ہے ،مجھے خوشی ہے کہ امن فاؤنڈیشن کے زندگیاں بدلنے کے فلسفے کو این آئی سی وی ڈی جیسے ادارے کی جانب سے بھرپور پذیرائی اور تعاون حاصل ہورہا ہے اور اس معتبر ادارے کی جانب سے سندھ کے دور دراز علاقوں میں نادار مریضوں کو پری ہاسپیٹل مفت علاج کی سہولیات میسر آسکیں گی ،اس وقت کراچی میں دو کروڑ سے زائد افراد کیلئے75امن ایمبولینس دستیاب ہیں جبکہ آبادی کے اعتبار سے کراچی شہر میں جان بچانے والی کم از کم 200ایمبولینسز کا ہونا ضروری ہے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر