چمگادڑ اور سؤر سے پھیلنے والی نیفا وائرس بارے ہائی الرٹ جاری

چمگادڑ اور سؤر سے پھیلنے والی نیفا وائرس بارے ہائی الرٹ جاری

ملتان(وقائع نگار) محکمہ صحت پنجاب نے چمگادڑ اور سؤر سے پھیلنے والی نیفا (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

وائرس بارے ہائی الرٹ جاری کردیا ہے۔ یہ وائرس پہلی مرتبہ 1998ء میں ملائیشیا میں پھیلا جو ایسے پھل کھانے سے پھیل سکتا ہے جو نیفا وائرس سے متاثرہ سؤر سے براہ راست میل جول بھی پھیل سکتا ہے ا ور اسکے بعد جس انسان میں نیفا وائرس منتقل ہوجائے وہ دیگر انسانوں میں اسکے پھیلاؤکا سبب بنتا ہے۔ ا ب تک اس کے پھیلاؤ کی کوئی ویکسین ایجاد نہیں ہوئی ہے۔ نیفا وائرس سے متاثرہ شخص میں بخار، سردرد، قے آنا، غنودگی، جسم میں درد، دورے پڑنا، قومہ میں چلے جانا جیسی علامات ظاہر ہوتی ہیں جبکہ مریض کو علاج کیلئے انتہائی نگہداشت کی ضرورت ہوتی ہے اس وائرس سے بچنے کیلئے بیمارسؤروں سے دور رہاجائے‘ متاثرہ شخص سے میل جول نہ رکھا اور متاثرہ چمکاڈرکے کھائے ہوئے پھل کو نہ کھایا جائے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر