یکم جنوری 2018ء سے 7جون تک ڈینگی کے شبہ میں 1133مریض ملتان کے ہسپتالوں میں لائے گئے‘ رپورٹ

یکم جنوری 2018ء سے 7جون تک ڈینگی کے شبہ میں 1133مریض ملتان کے ہسپتالوں میں لائے ...

ملتان(وقائع نگار)محکمہ صحت ملتان نے مختلف بیماریوں میں مبتلا مریضوں کی رواں سال کی رپورٹ جاری کردی ہے، یکم (بقیہ نمبر41صفحہ12پر )

جنوری 2018سے لیکر 7جون 2018تک ڈینگی بخار کے شبہ میں 1133مریض مختلف ہسپتالوں میں لائے گئے جس میں سے 945کا تعلق ملتان سے تھا جس میں سے تعلق رکھنے والے 7 مریضوں میں ڈینگی بخار کی تصدیق ہوئی۔ ملتان سے تعلق رکھنے والے 3مریضوں میں ڈینگی بخار کی تصدیق ہوئی جو دوسرے شہروں سے واپس آ ئے تھے۔ خسرہ کے 212مریض لائے گئے جن میں سے78کا تعلق ملتان سے تھا، خناق کے 18مریض لائے گئے تشنج کے 8 مریض لائے گئے جن میں سے 3تعلق کا ملتان سے تھا ، سینڈ فلائی کی مکھی کے کاٹنے سے 17مریض لائے گئے تمام مریض ملتان سے تھے،کانگو بخار کے شبہ میں 9مریض لائے گئے ایک مشتبہ مریض کا تعلق ملتان سے تھا۔ صرف ایک مریض میں کانگو بخار کی تصدیق ہوئی جس کا تعلق ملتان سے نہیں تھا ۔ کانگو بخار کے پازیٹو ایک مریض جبکہ 4 نیگٹو مریض فوت ہوئے۔ چکن پاکس کے 4مریض ہسپتالوں میں لائے گئے جن میں 38کا تعلق ملتان سیتھا سیزنل انفلوئنزا ایچ ون این ون (سوائن فلو) کے شبہ میں 251مریض لائے گئے،107میں مرض کی تصدیق ہوئی، 54 پازیٹو مریضوں کا تعلق ملتان سیتھا ، ایڈز کے 16مریض لائے گئے جن میں 12ملتان کے رہائشی تھے۔ کالی کھانسی کا ایک مریض لایا گیا جو ملتان سے تھا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر