طالبان کا قندوز میں پولیس چیک پوسٹ پر بڑا حملہ ،25افغان پولیس اہلکار مارے گئے 

طالبان کا قندوز میں پولیس چیک پوسٹ پر بڑا حملہ ،25افغان پولیس اہلکار مارے گئے 
طالبان کا قندوز میں پولیس چیک پوسٹ پر بڑا حملہ ،25افغان پولیس اہلکار مارے گئے 

  

کابل(ڈیلی پاکستان آن لائن )افغانستان کے شمالی صوبے قندوز میں طالبان نے پولیس بیس پر حملہ کر کے 25 اہلکاروں کو ہلاک کر دیا،افغان حکام نے جوابی فائرنگ میں 9حملہ آوروں کے مارے جانے کی تصدیق کی ہے جبکہ طالبان ترجمان نے قندوز میں پولیس بیس پر ہونے والے حملے کی ذمہ داری قبول کر تے ہوئے 6افغان پولیس چیک پوسٹوں پر قبضے کا بھی دعویٰ کیا ہے ۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق افغانستان کے اہم اور بڑے صوبے قندوز میں علی الصبح طالبان کے شدت پسندوں نے پولیس بیس پر دھاوا بول دیا اور بھاری ہتھیاروں سے حملہ کرتے ہوئے کم و بیش 19پولیس اہلکاروں کو ہلاک کر دیا ہے ،افغان حکام نے جوابی فائرنگ میں 9حملہ آوروں کے مارے جانے کا دعویٰ کیا ہے دوسری طرف قندوز کے گورنر کے ترجمان نعمت اللہ تیموری کا کہنا ہے کہ حملے میں 5 اہلکار زخمی بھی ہوئے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز بھی طالبان نے افغان صوبے ہیرات میں پولیس چیک پوسٹ پر حملہ کر کے 17 اہلکاروں کو ہلاک کر دیا تھا ۔واضح رہے کہ افغان طالبان نے قندوز میں پولیس بیس پر ہونیوالا یہ حملہ اس وقت کیا ہے جب دو روز قبل ہی افغان آرمی چیف نے طالبان کے ساتھ ایک ہفتے کی فائر بندی کا اعلان کیا تھا اور چند گھنٹے پہلے ہی طالبان نے افغانستان میں 2001 سے جاری جنگ میں پہلی بار حکومت کی جانب سے فائر بندی کی پیش کش قبول کرتے ہوئے بیان جاری کیا تھا کہ عید کے تین روز افغان  فورسز کے علاوہ ہر قسم کے آپریشنز بند رہیں گے ،افغان طالبان کا کہنا تھا کہ وہ افغان سیکیورٹی فورسز پر حملے میں پہل نہیں کریں گے لیکن اگر ضروری سمجھا تو اپنا دفاع کریں گے۔ طالبان نے کہا کہ یہ تین دنو ں کیلئے سیز فائر صرف افغان فورسز کے ساتھ ہو گا لیکن اگر کسی دوسری فوج یا طاقت نے حملہ کیا تو اس کا بھر پور جواب دیا جائے گا۔طالبان کے 3 روزہ  سیز فائر کے اعلان سے قبل افغان صدر اشرف غنی نے بھیطالبان کے خلاف ایک ہفتے کے لیے سیز فائر کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ طالبان کے پاس فائر بندی ایک بہترین آپشن ہے۔

مزید : بین الاقوامی