محکمہ داخلہ کی اجازت پر اہل خانہ کی ملاقات،نواز شریف کا مریم کو عدلیہ بحالی تحریک اور اپوزیشن کی اے پی سی میں شرکت کا حکم

    محکمہ داخلہ کی اجازت پر اہل خانہ کی ملاقات،نواز شریف کا مریم کو عدلیہ ...

لاہور(کرائم رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی) مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف نے پارٹی کی نائب صدر مریم نواز کو ’ووٹ کو عزت دو‘ اور ’عدلیہ بحالی تحریک‘ کو آگے بڑھانے اور اپوزیشن کی کل جماعتی کانفرنس (اے پی سی) میں بھر پور شرکت کی ہدایت کردی۔محکمہ داخلہ کی خصوصی اجازت پر سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف سے ان کے اہل خانہ نے کوٹ لکھپت جیل میں ملاقات کی۔مریم نواز، مہرالنساء، داماد راحیل منیر، ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان اور کیپٹن(ر) صفدر ملاقات کرنے والوں میں شامل تھے۔نواز شریف نے کہا کہ اب ووٹ کو عزت سے بڑھ کرمسلم لیگ(ن) کا کوئی اور نعرہ نہیں، آئی ایم ایف سے قرضہ لینے کے باوجود عوام کو کوئی ریلیف نہیں دیا گیا، غریب عوام کو مہنگائی کی چکی میں پستا نہیں دیکھ سکتا، جو کہتے تھے شہباز شریف واپس نہیں آئیں گے اب وہ منہ چھپاتے پھررہے ہیں۔نواز شریف کا کہنا تھا کہ میں نے ایک روپے کی کرپشن نہیں کی، اس کے باوجود پابند سلاسل رکھا جارہا ہے، مجھے اپنی صحت کی فکر نہیں رہی لیکن ملک کی معاشی صورتحال دیکھ کر دل خون کے آنسو روتا ہے۔ نواز شریف نے وزیرستان میں دہشت گردوں کی جانب سے پاک آرمی کے جوانوں کی شہادت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے مکمل خاتمے تک جنگ جاری رہے گی۔قبل ازیں شریف خاندان کے افراد کی کوٹ لکھپت جیل آمدپر لیگی کارکنوں نے ان کی گاڑیوں پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں اور ان کے حق میں نعرے لگائے۔دوسری جانب جی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر اپنے بیان میں مسلم لیگ(ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہاہے کہ پی آئی سی کے ڈاکٹرز کے ادویات سے میاں نواز شریف کا بلڈ پریشر یک دم کم ہو جاتا ہے،میاں نواز شریف کو 24 گھنٹے علاج کی ضرورت ہے۔ مریم نواز نے کہاکہ میاں نواز شریف کا جیل میں علاج نہیں ہو سکتاان کو فوری علاج کی ضرورت ہے۔

نوازشریف/ مریم نواز

مزید : صفحہ اول


loading...