علامہ عباس کمیلی حسینی باغ قبرستان چاکیواڑہ کراچی میں سپرد خاک

علامہ عباس کمیلی حسینی باغ قبرستان چاکیواڑہ کراچی میں سپرد خاک

کراچی(سٹاف رپورٹر) جعفریہ الائنس کے سربراہ ، معروف عالم دین اور سابق سینیٹر علامہ عباس کمیلی طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے ۔ علامہ عباس کمیلی کی نماز جنازہ بعد نماز مغرب مسجد خراساں سولجر بازار میں ادا کی گئی جس میں اہم شخصیات سمیت عزیز و اقارب اور شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی، تدفین حسینی باغ قبرستان چاکیواڑہ میں کی گئی ، ان کی عمر 88 برس تھی اور وہ شوگر، بلڈ پریشر اور عارضہ قلب میں مبتلا تھے۔ترجمان جعفریہ الائنس پاکستان کے مطابق علامہ عباس ک±میلی کو ایک روز پہلے ہی طبیعت بگڑنے پر ہسپتال منتقل کیا گیا تھا، تاہم ڈاکٹروں کی کوششوں کے باوجود وہ جانبر نہ ہوسکے اور فاطمیہ ہسپتال نمائش چورنگی میں انتقال کرگئے۔علامہ عباس کمیلی اتحاد بین المسلمین کے سرگرم جبکہ سابق سینٹر بھی تھے، اس کے علاوہ وہ فلسطین فاو¿نڈیشن پاکستان کے سرپرست اراکین میں سے تھے۔علامہ عباس کمیلی کئی روز سے سولجربازار میں واقع ہسپتال میں زیر علاج تھے۔مرحوم کا شمار پاکستان کے ممتاز عالم دین میں ہو تا تھا ، مرحوم نے اتحاد بین المسلمین کیلئے گراں قدر خدمات انجام دیں اور ہمیشہ اتحاد بین المسلین کےلئے سرگرم عمل رہے ، علامہ عباس کمیلی فلسطین فاو¿نڈیشن پاکستان کے سرپرست اراکین میں سے تھے ، انہوں نے ہمیشہ فلسطین و کشمیر کے مظلوموں کےلئے آواز اٹھائی۔ادھروزیرا عظم عمران خان نے ممتازعالم دین علامہ عباس کمیلی کے انتقال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا مرحوم اتحاد بین المسلمین اورفرقہ وارانہ ہم آہنگی کی ایک مضبوط آواز تھے۔وزیر اعظم نے دعا کرتے ہوئے کہا اللہ تعالی مرحوم کو جنت الفردوس میں جگہ دے اور سوگواران کو صبر عطا فرمائے۔دریں اثناءچیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے علامہ عباس کمیلی کی وفات پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا بطور عالم دین شخصیت اور خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا،وہ اتحاد بین المسلمین کے بڑے وکیل تھے۔علامہ عباس کمیلی کے انتقال پر مجلس وحدت المسلمین اور شیعہ علماءکونسل سمیت متعدد نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا علامہ ملت کا اثاثہ تھے اور ان کی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی، علامہ نے ہمیشہ فلسطین و کشمیر کے مظلوموں کےلئے آواز اٹھائی۔

علامہ عباس کمیلی

مزید : صفحہ اول


loading...