ترقی یافتہ ممالک کے گروپ جی 20 کے محکمہ خزانہ کے حکام انٹرنیٹ سروسز کوعالمی ٹیکس نیٹ میں لانے پر رضامند

ترقی یافتہ ممالک کے گروپ جی 20 کے محکمہ خزانہ کے حکام انٹرنیٹ سروسز کوعالمی ...

ٹوکیو (اے پی پی) ترقی یافتہ ممالک کے گروپ جی 20 کے محکمہ خزانہ کے حکام نے انٹرنیٹ سروسز کوعالمی ٹیکس نیٹ میں لانے پر رضامندی ظاہر کی ہے، ان کا کہنا ہے کہ گوگل اور فیس بک جیسی سروس دنیا بھر میں ٹیکس ریلیف یا کم ٹیکس ریٹ کا فائدہ اٹھاکر بھاری منافع کمارہی ہیں۔جی 20 ممالک کے محکمہ خزانہ کے حکام نے یہ فیصلہ ہفتے کے روز جاپان کے شہر فکوکا میں ہونے والے گروپ کے اجلاس میں کیا۔گروپ نے ادارہ برائے اقتصادی تعاون و ترقی کو یہ ٹاسک دیا کہ وہ گوگل اور فیس بک جیسی نیٹ سروسز کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے لیے لائحہ عمل وضح کرے۔رکن ملکوں کا کہنا تھا کہ بڑی انٹرنیٹ سروسز آئر لینڈ جیسے ملکوں میں کم ٹیکس ریٹ اور بعض ممالک میں مکمل چھوٹ کا فائدہ اٹھا کر بھاری منافع کمارہی ہیں، انھیں فوری طور پر ٹیکس نیٹ میں لانے کی ضرورت ہے۔

ادھر، ادارہ برائے اقتصادی تعاون و ترقی کی سربراہ اینجل گوریا رواں ہفتے کے آخر میں جاپان کے شہر فکوکا میں جی 20 وزرائے خزانہ اور مرکزی بینکوں کے سربراہوں کے اجلاس میں اس حوالے سے ایک روڈ میپ پیش کریں گی جس پر 129 ملکوں نے دستخط کررکھے ہیں۔دوسری جانب وزرائے خزانہ کے باقاعدہ اجلاس سے قبل پالیسی سازوں کے ساتھ ایک پینل مباحثے کے دوران فرانسیسی وزیر خزانہ برونو لی میرے نے کہا کہ ہمیں اس حوالے سے جلدی سے کام لینا ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے عالمی اتفاق رائے کے لیے ایک ٹائم فریم وضح کیا جائے، اور یہ کام رواں سال کے آخر تک کرلیا جانا چاہیے۔

مزید : کامرس


loading...