وفاقی چیمبرکلب بن گیا، کارکردگی صفر، سازشیں عروج پرپہنچ گئیں، اکانومی واچ

وفاقی چیمبرکلب بن گیا، کارکردگی صفر، سازشیں عروج پرپہنچ گئیں، اکانومی واچ

اسلام آباد(صباح نیوز) پاکستان اکانومی واچ کے صدر ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا ہے کہ تبدیلی کے نام پر ووٹ لے کر آنے والے یونائیٹڈ بزنس گروپ(یو بی جی) نے ایف پی سی سی آئی جیسے فعال ادارے کو ایک کلب بنا کر دکھ دیا ہے جسکی کارکردگی صفر ہے جبکہ سازشیں عروج پر ہیں۔ وفاقی چیمبر میں سیاست سازشوں اور اقرباء پروری عام اور اس کی کارکردگی صفر ہو گئی ہے۔کاروباری برادری کے مفادات کی نگہبانی کرنے والے اس ادارے کی تمام تر توجہ فوٹو سیشن تک محدود ہو کر رہ گئی ہے۔ ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے بزنس مین پینل کے سیکرٹری جنرل (فیڈرل) احمد جواد سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جب سے یو بی جی ایف پی سی سی آئی میں برسر اقتدار آئی ہے میرٹ کی پامالی جاری ہے۔اہم عہدوں پر کٹھ پتلیوں کی تعیناتی نے اس ادارے کی ساکھ کو تباہ کر دیا ہے جس کی وجہ سے حکومت اسے توجہ دینے کو تیار نہیں۔ اس موقع پر احمد جواد نے کہا کہ کاروباری برادری ایف پی سی سی آئی کی مسلسل جی حضوری کی پالیسی سے نالاں ہے۔ایف پی سی سی آئی کیپیٹل آفس منتخب اور غیر منتخب عہدیداروں کے مابین اکھاڑا بننے کے بعد اب میدان جنگ بن چکا ہے۔حکومت نے صنعتی شعبہ کو دی جانے والی زیرو ریٹنگ کی سہولت واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے جس کے خلاف ایس ایم منیر گروپ سرگرم ہو گیا ہے۔ ٹڈاپ، ملکی برامدات اور ایف پی سی سی آئی کی تباہی کے ذمہ دار کس منہ سے حکومت سے مراعات طلب کر رہے ہیں جبکہ انکی کارکردگی صفر ہے۔

مزید : کامرس


loading...