سابق وزیراعظم کی والدہ کیخلاف اراضی قبضہ کیس، سماعت ملتوی

سابق وزیراعظم کی والدہ کیخلاف اراضی قبضہ کیس، سماعت ملتوی

  

لاہور(نامہ نگار)سول کورٹ نے سابق وزیر اعظم میاں محمدنوازشریف کی والدہ کی طرف سے خاتون کی اراضی پر قبضہ کرنے کے خلاف کیس کی سماعت15جولائی تک ملتو ی کرتے ہوئے فریقین کے وکلاء کو بحث کے لئے طلب کرلیاہے۔سول جج رابعہ ریاض نے رابعہ روشن کی درخواست پر سماعت کی،عدالت میں جمع کروائے گئے جواب میں میاں نواز شریف کی والدہ بیگم شمیم اختر کا موقف ہے کہ انہوں نے51لاکھ 84ہزار کے عوض زمین خریدی،اراضی پر قبضہ کرنے کادرخواست خاتون کا دعویٰ جھوٹ پر مبنی ہے،دعویدارخاتون رابعہ روشن نے ایک لمبے عرصے تک رجسٹری کو چیلنج نہیں کیا،دعویٰ مجھے اور میری فیملی کو بلیک میل کرنے کے لئے دائر کیا گیاہے،عدالت سے استدعاہے کہ ارضی پر قبضے کے دعویٰ کو مسترد کرتے ہوئے درخواست گزار پر جرمانہ عائد کیاجائے،درخواست گزار رابعہ روشن کا موقف ہے کہ میاں نواز شریف کی والدہ بیگم شمیم اختر نے جاتی امراء کے اطراف 108کنال اراضی پر قبضہ کر رکھا ہے۔

اراضی قبضہ

مزید :

صفحہ آخر -