ٹیکس بار ایسوسی ایشن کی کم از کم ٹیکس ختم کرنے کی تجویز

ٹیکس بار ایسوسی ایشن کی کم از کم ٹیکس ختم کرنے کی تجویز

  

اسلام آباد (اے پی پی) پاکستان ٹیکس بار ایسوسی ایشن (پی ٹی بی اے) نے کوڈ۔19 کے منفی اثرات کے پیش نظر انفرادی اور ایسوسی ایشن آف پرسنز (اے او پی ایس) کے کاروباروں کے لئے آئندہ دو سال کے دوران کم از کم ٹیکس ختم کرنے کی تجویز دی ہے۔ پی ٹی ی اے نے آئندہ دو سال کے دوران کم از کم ٹیکس ختم کرنے کی تجویز دی ہے۔ پی ٹی بی اے نے آئندہ مالی سال 2020-21ء کی بجٹ تجاویز میں کہا ہے کہ کارپوریٹ اداورں کے لئے کم ازکم ٹیکس شرح کو 0.5 فیصد تک کرنے کے ساتھ ساتھ سپر ٹیکس کو بھی معطل کیا جائے۔ ایسوسی ایشن کی جانب سے بجٹ تجاویز پیش کرتے ہوئے ذیشان مرچینٹ ایڈووکیٹ ہائی کورٹ نے کہا کہ کورونا وائرس کی عالمی وباء کی وجہ سے پاکستان سمیت دنیا بھر میں کاروباری سرگرمیاں متاثر ہوئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کاروبار اور معیشت کی بحالی کے لئے کارپوریٹ ٹیکس کی شرح 25 فیصد جبکہ چھوٹی کمپنیوں کے ٹیکس کی شرح کو 20 فیصد تک کم کرنے کی ضرورت ہے۔ اسی طرح تنخواہ دار طبقہ یکلئے ٹیکس کی شرح سال 2016 والی بحال کی جائے اور کم از کم تنخواہ کی حد 12 لاکھ مقرر کی جائے۔ اسی طرح کووڈ۔19 کے خلاف جاری جدوجہد کو کامیاب بنانے کے لئے دیئے گئے عطیات اور اس حوالے سے سرگرم طبہ مراکز کو ٹیکس میں مکمل چھوٹ دی جائے۔ ٹیکس کے دائرہ کار میں اضفہ کے لئے مراعات کے ساتھ ساتھ کاروباری آسانیوں کی فراہمی کے پیش نظر و ود ہولڈنگ ٹیکس میں بھی رعایت دی جائے۔ پی ٹی بی اے ایسوسی ایشن نے اپنی بجٹ تجاویز میں مزید کہاکہ کاروباری اور تنخواہ دار طبقہ کو ٹیکس مراعات کی فراہمی سے نہ صرف ٹیکس کے دائرہ کار میں اضافہ ہو گا بلکہ حکومت کی ٹیکس وصولیوں کے ساتھ ساتھ ملک میں تجارتی و صنعتی سرگرمیوں کو بھی فروغ حاصل ہو گا۔

مزید :

صفحہ آخر -