لوئرمہمند پولیس کا پڑانگ غار میں منشیات فروشوں کیخلاف کریک ڈاون

لوئرمہمند پولیس کا پڑانگ غار میں منشیات فروشوں کیخلاف کریک ڈاون

  

مہمند(نمائندہ پاکستان)مہمند،لوئرمہمند پولیس کا پڑانگ غار میں منشیات فروشوں کے خلاف کریک ڈاون،18کلوگرام افیون برآمد۔چھاپوں کے خلاف مقامی لوگوں کا احتجاج، پولیس کے خلاف مزاحمت کے لئے لوگوں کو مشتعل کرنے والوں کے خلاف ایف آئی آر درج،گرفتاری کے لئے جلد کاروائی کی جائیگی۔ ڈی پی او فضل احمد جان۔ تفصیلات کے مطابق قبائیلی ضلع مہمند کے لوئرسب ڈویژن تحصیل پڑانگ غار میں منشیات کے خلاف ایک کاروائی کے دوران مختلف مکانات پر چھاپے مارکر18 کلوگرام افیون برآمد کرلیا گیا ہے۔ چھاپوں کے خلاف سینکڑوں مقامی لوگوں نے پولیس کے خلاف مزاحمت کی۔ اور روڈ کو بند کردیا۔ واقعہ کے بارے میں ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر فضل احمد جان نے بتایا کہ پولیس کی اعلیٰ حکام کی خصوصی ہدایات پر شہریوں کی جان و مال کی حفاظت، جرائم پیشہ عناصر کی سرکوبی اور منشیات فروشوں کے خلاف ضلعی پولیس نے کاروائیاں تیز کردی ہے۔.اس سلسلے میں گزشتہ روز ایس ڈی پی او لوئرمہمند دل فراز خان اور ڈی ایس پی اپر پڑانگ خالد خان کی نگرانی میں ایس ایچ او قاسم, ایڈیشنل ایس ایچ اے ایس نیاز محمد لیڈی سرچر بمعہ دیگر پولیس ٹیم نے اپر پڑانگ غار کے حدود میں کاروائی کرکے محب گل ولد حکیم کے گھر سے 5020 گرام،صاحب گل ولد حکیم کے گھر سے2790 گرام اور زدہ گل ولد امام صلی خان کے گھر سے 10190 گرام اورمجموعی طور پر 18000 گرام افیون جو ہیروئن میں استعمال ہونے والے تھے کو برآمد کرلیا۔انہوں نے کہا کہ واپسی پر راستے میں ان لوگوں نے جن کے خلاف پہلے سے افیون فروشی میں ایف آئی آر کاٹے گیے تھے اور جن کا افیون فصل تلف کیا گیا تھا راستے میں کرکنہ کے مقام پر پولیس کے خلاف مزاحمت کرنے لگے اور روڈ پر بڑے بڑے پتھر رکھے اور 250 لوگ جن میں 70 تک لوگ با مسلح تھے نے روڈ بلاک کرکے پولیس پارٹ پر حملہ کیا جس میں پولیس کنسٹیبلان اسرار اور رومان پتھراؤکے دوران زخمی ہوگئے۔ لیکن واقعہ کے سنگینی کو مد نظر رکھ کر مقامی پولیس نے صبر وتحمل سے کام لیا۔ڈی پی او مہمند نے کہا کہ ملزمان کی گرفتاری مد نظر رکھ کر افیون فروشوں اور پولیس پاٹی پر حملہ زنی کرنے والے ملزمان کے خلاف ایف آئی آر درج رجسٹرڈ کیے گیے۔اور منشیات کے کاروبارمیں ملوث اور پولیس کے ساتھ جھگڑا کرنے والے ملزمان کی گرفتاری کیلیے جلد از جلد کاروای کی جائیگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -