پشاور، پاکستان یوتھ پارلیمنٹ کے عہدیداروں کا جامعات کی انتظامیہ کیخلاف احتجاجی مظاہر ہ

پشاور، پاکستان یوتھ پارلیمنٹ کے عہدیداروں کا جامعات کی انتظامیہ کیخلاف ...

  

پشاور(سٹی رپورٹر)پاکستان یوتھ پارلیمنٹ کے عہدیداران نے ہائیر ایجوکیشن اور جامعات کے انتظامیہ کے خلاف جی ٹی روڈ پر احتجاج مظاہرہ کیا جسمیں فیڈریشنز اور آرگنائزیشن اور طالبات نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جس پر انکے ھق میں مطالبات درج تھے مظاہرے کی قیادت یوتھ ایم پی اے محمد اسامہ ہمایون نے کی۔اس موقع پر اپنے خطاب میں یوتھ ایم پی اے اسامہ ہمایون نے کہا کہ آن لائن کلاسز کے حوالے سے قبائلی اور پشاور کے طلبہ کو بہت سے مسائل کا سامنا ہے جبکہ موجودہ ان لائن کلاسز ایک فارمیلیٹی سے زیادہ کچھ نہیں جسکو کسی طالب علم کو سمجھ نہیں ارہی۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ اگر گورنمنٹ SOPs کے تحت بازار کول سکتے ہیں تو تعلیمی ادارے کیوں نہیں۔ بازاروں سے زیادہ تعلیم یافتہ لوگ یونیورسٹی میں ہوتے ہیں اسی لئے ایس او پیز کیساتھ جامعات کھول دئے جائے جبکہ موجودہ معاشی حالات کے تناظر میں طلبہ کے سمیسٹر فیس معاف کیے جائے کیونکہ زیادہ تر طلبہ ٹیوشن پرھا کر اپنی سمیسٹر فیس کی ادائیگی کرتے ہے اور قبائلی اضلاع سمیت پشاور میں ان لائن کلاسز کے اجراء سے پہلے انٹرنیت کی سہولیات بحال کی جائے اور طلباء کو مکمل سہولیات دئے جائے اسکے علاوہ جن پرائیویٹ سکولوں کے 2000 سے زیادہ فیسس ہیں۔ ان پر ایکشن لے کر 2مہینوں کی فیس معاف کی جائے جبکہ ترقیاتی فنڈز پارکوں کے اور سڑکوں کے بجائے قبائلی اضلاع کی ترقی اور مسائل کے حل کرنے کیلئے خرچ کئے جائے بصورت دیگر خیبر پختونخوا کے طلبہ سمیت وزیر اعلیٰ ہاوس کے سامنے غیر معینہ مددت تک کیلئے احتجاجی دھرنا دینگے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -