کنگ عبداللہ بن عبد العزیز پروگرام برائے چیریٹی ورکس نے سندھ حکومت کی بڑی مشکل حل کر دی،کورونا سے بچاؤکے لئے ایسی چیز حوالے کردی جس کی سب سے زیادہ ضرورت تھی

کنگ عبداللہ بن عبد العزیز پروگرام برائے چیریٹی ورکس نے سندھ حکومت کی بڑی ...
 کنگ عبداللہ بن عبد العزیز پروگرام برائے چیریٹی ورکس نے سندھ حکومت کی بڑی مشکل حل کر دی،کورونا سے بچاؤکے لئے ایسی چیز حوالے کردی جس کی سب سے زیادہ ضرورت تھی

  

حیدرآباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) کنگ عبداللہ بن عبد العزیز پروگرام برائے چیریٹی ورکس اور اسلامی ترقیاتی بینک نے کورونا کی وباسےنمٹنے کےلئےسندھ حکومت کو بنیادی حفاظتی سامان کی کھیپ فراہم کر دی،دو کروڑ روپے مالیت کے حفاظتی سامان عطیہ کرنے کی تقریب ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سروسز سندھ کے حیدرآباد دفتر میں منعقد کی گئی،ایڈیشنل ڈائریکٹر محکمہ صحت سندھ ڈاکٹریار محمد کھوسو نے امدادی سامان وصول کیا،اس موقع پر اسلامی ترقیاتی بنک کے پاکستان میں نمائندے انعام اللہ خان، کاپ پروگرام پاکستان موبائل کلینکس کے پراجیکٹ منیجر مراد کاوک دان، محکمہ صحت سندھ اور آئی ایچ ایچ کے نمائندوں نے شرکت کی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اسلامی ترقیاتی بنک کے پاکستان میں نمائندے انعام اللہ خان نے کہا کہ اسلامی ترقیاتی بنک نے پاکستان کو بنک کے ترجیحی پروگرام میں شامل کر رکھا ہے اور پاکستان بنک کی امداد حاصل کرنے والا دوسرا بڑا ملک ہے، جس میں مجموعی طور پر 13 ارب ڈالر کی براہ راست فنڈنگ فراہم کی جا رہی ہے،پاکستان کو توانائی، ٹرانسپورٹ، صحت اور تعلیم کے ساتھ ساتھ پیٹرولیم مصنوعات اور ایل این جی کی درآمد کیلئے براہراست سپورٹ فراہم کر رہا ہے۔

انعام اللہ خان نے تقریب میں بتایا کہ اسلامی ترقیاتی بنک کے رکن ممالک کو کووڈ 19 کے وبائی مرض سے نمٹنے اوربحالی کیلئے دو ارب 30 کروڑ ڈالر کے پیکج کی منظوری دی ہے، اور پاکستان کیلئے کورونا سے نمٹنے کیلئے 70 ملین ڈالر کا ہنگامی فنڈ مختص کیا گیا ہے، محکمہ صحت سندھ کے اشتراک سے کنگ عبداللہ بن عبدالعزیز پروگرام اور اسلامی ترقیاتی بنک ہسپتالوں اور صحت کی سہولیات فراہم کرنے والے ورکرز کو حفاظتی سامان فراہم کر رہا ہے،جس سے ڈاکٹر اور فرنٹ لائن پر کام کرنے والے ہیلتھ ورکرز کی حفاظت ممکن بنائی جا سکے گی۔ڈاکٹر یار محمد کھوسو نے تقریب سے خطاب میں کہا کہ دو کروڑ روپے مالیت کے اس حفاظتی سامان کی محکمہ صحت کے ورکرز اور سٹاف کو اشد ضرورت تھی، اس حفاظتی سامان کو فوری طور پر سندھ بھر کے ہسپتالوں، آئسولیشن مراکز میں کام کرنے ڈاکٹرز اور نرسز کیلئے بھجوایا جائے گا،سندھ حکومت کورونا سے نمٹنے کیلئے بھرپور کوششیں کر رہی ہے اور کورونا ٹیسٹس کی تعداد پر بڑھا دیا گیا ہے، ایک ایسے وقت میں جب مریضوں کی تعداد روز بروز بڑھتی جا رہی ہے اور لاک ڈاؤن کھلنے سے اس میں بے تحاشا اضافہ ہوا ہے، اسلامی ترقیاتی بنک اور کاپ پروگرام کی یہ امدادی کھیپ محکمہ صحت سندھ کی صلاحیت بڑھانے میں مددگار ثابت ہوگی۔

اس موقع پر کنگ عبدللہ بن عبدالعزیز پروگرام کے پراجیکٹ منیجر مراد کاوکدان اورایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل محکمہ صحت سندھ نے امداد فراہم کے معاہدے پر دستخط کئے۔ پاکستان موبائل کلینک منصوبے کے پراجیکٹ منیجر مراد کاوکدان نے تقریب کو بتایا کہ آئی ایچ ایچ پاکستان میں 8 موبائل کلینکس چلا رہا ہے، جن میں 6 موبائل کلینک خیبر پختونخواہ میں ہیں جبکہ دو موبایل کلینکس تھرپارکر اور عمر کوٹ میں کام کر رہے ہیں، جلد ہی مزید سات موبائل کلینکس سندھ کو فراہم کئے جائیں گےجو دور دراز دیہات میں صحت کی جدید سہولیات فراہم کر رہے ہیں،موبائل کلینکس کا منصوبہ 2023 تک پاکستان میں بنک اور کاپ کی فنڈنگ سے جاری رہے گا، جس کیلئے 25 ملین ڈالر فراہم کئے گئے ہیں اور اس کے بعد یہ منصوبہ محکمہ صحت سندھ اور خیبرپختونخواہ کے حوالے کر دیا جائے گا۔ان موبائل کلینکس میں ایکسرے، ای سی جی، آپریشنز، مفت ادویات، زچہ و بچہ کی سہولیات اور الٹراساونڈ کی سہولیات سے اب تک ایک لاکھ سے زائد مریض مستفید ہو چکے ہیں۔ سندھ کو فراہم کئے جانے والے حفاظتی سامان میں ڈاکٹرز اور طبی عملے کیلئے 35 ہزار ڈسپوزیبل گاؤنز، اور فیس ماسک، 12 سو این 95 ماسک، اور 1200 حفاظتی عینکیں،17 ہزار پانچ سو ڈسپوزیبل ٹوپیاں، ہینڈ سینیٹایزر کی 10 ہزار بوتلیں اور 20 ہزار انفراریڈ تھرمامیٹر، صابن، فیس شیلڈ، اور شو کورز اور 5 ہزار بائیو ہیزرڈ بیگس بھی شامل ہیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -حیدرآباد -کورونا وائرس -