پی ٹی آئی کے دور میں پارلیمنٹ سمیت ہر ادارہ کمزور ہوا: سراج الحق 

پی ٹی آئی کے دور میں پارلیمنٹ سمیت ہر ادارہ کمزور ہوا: سراج الحق 

  

لاہور(این این آئی)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی کے دور میں پارلیمنٹ سمیت ہر ادارہ کمزور ہوا۔ جمہوری اداروں کو مضبوط کرنے کے لیے ملک کی تینوں بڑی سیاسی جماعتوں نے کوئی کردار ادا نہیں کیا۔ پی ٹی آئی عوام میں سب سے زیادہ غیر مقبول جماعت بن چکی ہے۔ مہنگائی اور غربت میں بے پناہ اضافہ کی وجہ حکومت کاآئی ایم ایف کی شرائط پر بے چون و چرا عملدرآمد تھا۔ حکومت تمام تر وعدوں اور بلندوبانگ دعوؤں کے باوجو د عوام کو ریلیف دینے میں ناکام رہی۔آئی ایم ایف کی ڈکٹیشن پربجٹ میں قوم پر مزید ٹیکس لگیں گے۔ حکومت غیر ترقیاتی اخراجات کم کرے اورزبوں حالی کا شکار تعلیم و صحت کے شعبوں کو سنبھالا دینے کی کوشش کی جائے۔موجودہ حکومت  کے دور میں وفاقی کابینہ کے سب سے زیادہ اجلاس ہوئے مگر ان اجلاسوں میں ہونے والے فیصلوں پر عمل درآمد کہیں نظر آیا۔ حکمرانوں نے ہماری آنے والی نسلوں کو بھی آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کی غلامی کی ہتھکڑیاں پہنا دی ہیں۔کرپشن،بدعنوانی اور رشوت ستانی جیسے جرائم کے مکمل خاتمہ کیلئے اسلامی تعلیمات کی روشنی میں فیصلے کرنا ہونگے۔چوری کرکے بیرون ملک منتقل کی گئی قومی دولت واپس آجائے تو نا صرف پاکستان کے تمام قرضے اتر سکتے ہیں بلکہ عوام کو غربت مہنگائی،بے روزگاری دلدل سے بھی نکالا جاسکتا ہے۔ کینیڈا میں مسلمان فیملی کو کچل کر مارنے کا واقعہ اندوہناک ہے۔لواحقین کے دکھ میں برابر شریک ہیں۔ اسلامو فوبیا مغرب کا کلچر بن چکا ہے۔ مسلمانوں کو آئے دن ظلم و تشدد کا نشانہ بنایا جارہاہے۔ فلسطینی، کشمیری اور روہنگیاکے مسلمانوں کی حالت زار پر عالمی اداروں کی خاموشی مجرمانہ فعل ہے۔ امت کو متحد ہو نا پڑے گا۔ قرآن و سنت سے رہنمائی لے کر دین کا جھنڈا ہر جگہ بلند کرنے کی ضرورت ہے۔ اسلام آئے گا تو امن قائم ہوگا۔ ا ن خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں مختلف وفود سے ملاقاتوں کے موقع گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -