گرمی کی شدت سے سکولوں میں کئی بچے بیہوش، متعدد کی حالت غیر

 گرمی کی شدت سے سکولوں میں کئی بچے بیہوش، متعدد کی حالت غیر

  

 لاہور (کرائم رپورٹر)گرمی کی شدت کے باعث لاہور کے مختلف سکولوں میں بچے نڈھال ہونے لگے درجن سے زائد بچوں کوحالت غیر ہونے پر ان کے والدین کو بلوا کر انھیں گھر بھجوانا پڑا  جبکہ گورنمنٹ جونیئر ماڈل سکول میں 2  بچوں کے ناک سے خون بہنے لگا، جس پر اساتذہ نے ان کو فوری طور پر طبی امداد فراہم کی۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز گڑھی شاہو اور دھرم پورہ کے دومقامی سکولوں میں گرنی کی شدت کے باعث بے ہوش ہوگئے جس پر سکول انتظامیہ کو ان کے والدین بلواکر بچوں کو گھر واپس بھجوانا پڑا، جون کی آگ برساتی گرمی میں جہاں بڑے افراد کا گھروں سے باہر نکلنا محال ہورہا ہے، وہاں معصوم بچوں کیلئے سکولوں میں گرم کمروں میں بیٹھنا اور پھر آگ برساتی گرمی میں گھروں کو واپس آنا شدید پریشانی کا باعث ہے۔لیکن اس کے باوجود پہلی تا کلاس آٹھویں کے بچے جن کا تعلیمی سیشن اگست میں شروع ہونا ہے، ان کے امتحانات کا بھی کوئی مسئلہ نہیں ہے، پھر بھی ان کو محکمہ تعلیم اور سکول انتظامیہ کے احکامات کے باعث سکولوں میں جانا پڑ رہا ہے، محکمہ تعلیم کی جانب سے سکولوں کے اوقات کار کے حوالے سے ابھی تک کوئی واضح نوٹیفکیشن بھی جاری نہیں کیا گیا، بعض بوائز اور خواتین سکولوں میں تو پرنسپل ہی سیکرٹری، سی ای او اور ڈی ای او بنے بیٹھے ہیں، سکولوں میں صبح کے اوقات میں کلاسز پڑھانے کی بجائے دن 12 بجے اور بعض سکولوں میں ایک بجے تک کلاسز پڑھائی جاتی ہیں، بچوں کا اتنے طویل وقت کیلئے کلاسز میں بیٹھنا بھی مشکل ہوگیا ہے، اس کے ساتھ ساتھ لوڈشیڈنگ بھی ہورہی ہے۔

 بچے  بیہوش

مزید :

صفحہ آخر -