بحریہ ٹاؤن ڈیلرز،بلڈرزاور رہائشیوں کا لاہور میں دوسرے روزپرامن احتجاج

 بحریہ ٹاؤن ڈیلرز،بلڈرزاور رہائشیوں کا لاہور میں دوسرے روزپرامن احتجاج

  

راولپنڈی (خصوصی رپورٹ) بحریہ ٹاؤن کراچی کودو روز قبل بدترین دہشتگردی اکا نشانہ بنایا گیاتھا۔ دہشت گردی کے اس واقع میں شر پسندو ں نے بحریہ ٹاؤن میں داخل ہو کر اربوں روپے کے املاک کو تباہ کر دیا،جن میں کئی گاڑیاں، موٹر سا ئیکلوں، عمارتوں، ریسٹورنٹس، دکانیں،دفاتر، شورومز کو نظر آتش کیا گیا۔ اس سلسلے میں دوسرے روزلاہور میں بھی تمام رئیل اسٹیٹ بلڈرز، ڈیلرز اور تمام بزنس کمیونٹیز اور بحریہ ٹاؤن کے رہائشیوں نے بڑی تعداد میں پرامن احتجاج کیا۔بحریہ ٹاؤن لاہور کے رہائشی بھی کراچی کے حق میں کھڑے ہوئے اور اِ س پر سوزواقعے کی سخت الفاظ میں مذمت کی۔ اس پرامن احتجاج کے دوران انہوں نے مقتدر حلقوں سے سوال کیا کہااس پر سوز واقع کے بعد بحریہ ٹاؤن کے مکینوں کا کھویا ہوا تحفظ کا احساس کون واپس لائے گا اور ان کو تحفظ کو ن دے گا؟  اورشرکاء نے حکامِ بالاسے سوال کرتے ہوئے کہا کہ کیا بحریہ ٹاؤن کے کاروباری حلقوں اور رہائشیوں کیلئے انصاف کے دروازے  بند رہیں گے؟ کیوں نہیں کوئی ملکیت کے کاغذات لے کر آیا جس سے ثابت ہو کہ اس کی زمین پر قبضہ ہوا ہے؟ کیا بحریہ ٹاؤن کے رہائشیوں کو بے یارو ں مدد گار چھوڑ دیا جائے گا؟ہم نے کسی کی زمینوں پر ناحق  قبضہ نہیں کیا اور کوئی اگر ایک انچ بھی اپنی ملکیت، زمینوں پر بحریہ ٹاؤن کا غیر قانونی کام یا قبضہ ثابت کر دے تو بحریہ ٹاؤن اسکا ذمہ دار ہوگا  اور اس نے پہلے بھی آزادانہ تحقیقات کا سامنا کیا ہے اور اب بھی کرنے کے لیے تیار ہے۔ بحریہ ٹاؤن ڈیلرز اینڈ بلڈر ایسوسیئشن کا کہنا تھا کہ بحریہ ٹاؤن جہاں بیرونِ ملک پاکستانیوں کی سرمایہ کاری کے ذریعہ پاکستان کے لئے زرِ مبادلہ لایا،  وہیں سندھ کی عوام کے لئے روزگار اور اعلی درجے کی رہائشی سہولیات بھی مہیا کرنے میں بھی کامیاب ہوا۔اگرچہ اس واقع کے دوران بحریہ ٹاؤن کراچی کی کاروباری برادری کو بر قت تحفظ فراہم نہیں کیا گیا مگربحریہ ٹاؤن ڈیلرز اینڈ بلڈر ایسوسیئشن جواباََ کبھی بھی تشدد اور اشتعال کا راستہ نہیں اپنائے گی اور قانون و مقتدر حلقوں کے سامنے اپنی آوازا ٹھائے گی۔

مزید :

صفحہ آخر -