بہاولپور: تجارتی مراکز، چھوٹی‘ بڑی مارکیٹوں کی سکیورٹی بڑھانے کاحکم

  بہاولپور: تجارتی مراکز، چھوٹی‘ بڑی مارکیٹوں کی سکیورٹی بڑھانے کاحکم

  

بہاول پور(بیورورپورٹ) ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر محمد فیصل کامران نے کہا ہے کہ لالچ یا دباؤ کے تحت مقدمات کی تفتیش بے گناہ کو گناہ گار جبکہ گناہ گار کو بے گناہ بنا دیتی ہے،ٹھوس شواہد کی بنیادوں پر کی گئی تفتیش جہاں پر افسران کی نیک نامی اور محکمہ کی سرخروئی کا باعث بنتی ہے وہاں (بقیہ نمبر5صفحہ6پر)

پر مظلوم کو تفتیش سے ملنے والا انصاف پولیس والوں کو دنیا و آخرت میں سرخرو کر دیتا ہے،ضلع میں درج ہونے والے ہر مقدمہ کی تفتیش کی نگرانی خود کروں گا میرٹ سے ہٹ کر تفتیش کرنے والوں کے لئے محکمہ میں کوئی جگہ نہیں ایسے پولیس والے ضابطہ کی فوجداری کارروائی کے باعث جیل میں ہوں گے،ڈی پی او۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضلع بھر کے تفتیشی افسران کو خصوصی ہدایات دیتے ہوئے کیا، ڈی پی اومحمد فیصل کامران نے کہا کہ پولیس کے پاس مقدمات کی تفتیش کا اختیار ایسی ذمہ داری ہے جس پر جرم کے خاتمے اور خدا نخواستہ اس کے بڑھنے کا انحصار ہے،تفتیش میرٹ پر ہو،ٹھوس شواہد کے ساتھ اسے عدالت میں پیش کیا جائے،معزز عدالتوں سے پولیس تفتیش کی روشنی میں مجرموں کو قانون کے مطابق سزا ملے تو معاشرے پر قانون کا خوف بڑھتا ہے،جرائم پیشہ عناصر کو اپنا قانونی انجام نظر آتا ہے،جس سے جرم لازمی طور پر کم سے کم بلکہ کمترین سطح پر آ جاتا ہے اور اگر خدا نخواستہ تفتیش میرٹ پر نہ ہو،لالچ یا دباؤ سے گناہ گار بے گناہ اور بے گناہ گناہ گار بن جائیں تو پھر مجرم قانون سے سزا نہیں ملتی جس سے متاثرہ فریق دلبرداشتہ جبکہ ملزم فریق کا حوصلہ بڑھتا ہے،انہوں نے کہا کہ جہاں پر ضلع میں انتظامی عنوان سے پولیس کے معاملات دیکھنا میرا فرض ہے وہاں پر تفتیش کے عمل کو مکمل طور پر میرٹ کے تحت ٹھوس شواہد کی روشنی میں یکسو کروانا میری ذمہ داری ہے،جس کے لئے میں ضلع میں درج ہونے والے ہر مقدمہ کی تفتیش کی خود نگرانی کروں گا،مقدمہ کی مدعی یا ملزم پارٹی اگر کسی سطح پر سمجھے کہ تفتیش میرٹ سے ہٹ کر ہو رہی ہے تو وہ مجھے سے براہ راست رابطہ کر سکتی ہے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے ویژن اور آئی جی پنجاب انعام غنی کی ہدایات کے تحت ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر محمد فیصل کامران معاشرے کے ہر طبقہ کے جان ومال کے تحفظ کے لئے کمیونٹی پولیسنگ کو جاری رکھے ہوئے ہیں،انہوں نے گزشتہ روز شہر کے اہم تجارتی مراکز اور کاروباری مارکیٹوں کے سیکیورٹی انتظامات چیک کیے،ڈی پی اومحمد فیصل کامران نے ضلع بھر کی پولیس کو احکامات جاری کرتے ہوئے کہا کہ تجارتی مراکز اور کاروباری مارکیٹوں کو سیکیورٹی فراہم کرنا ناگزیرہے تاجر اور دوکانداربرادری ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں،تاجروں اور دوکانداروں کو ہم نے مکمل سیکیورٹی فراہم کرنا ہے تاکہ وہ مستحکم احساس تحفظ کے ساتھ اپنا کاروبار کر کے ملک کی معاشی ترقی میں اپنا کردار ادا کر تے رہیں،ڈی پی اونے کہا کہ تجارتی مراکز اور کاروباری مارکیٹوں میں سیکیورٹی کے حوالے سے وہ تمام ایس اوپیزپورے ہونے چاہیے جنہیں تجارتی مراکز کی سیکورٹی کے حوالے سے لازمی قرار دیاگیاہے،انہوں نے کہا کہ پولیس پٹرولنگ پر جو افسران مامور ہوں گے وہ تجارتی مراکز اور کاروباری مارکیٹوں کی سیکیورٹی چیکنگ کے بھی ذمہ دار ہوں گے،ڈی پی اونے کہا کہ سیکیورٹی پر تعینات پولیس والے ہوں یا تاجر برادری کے نجی سیکیورٹی گارڈز،سب کا ہر قسم کے حالات کے حوالے سے تیار اور ہائی الرٹ رہنا ضروری ہے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارکے ویژن اور آئی جی پنجاب انعام غنی کی ہدایات کے تحت ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر محمد فیصل کامران نے اپنی تعیناتی سے لے کر اب تک اپنا مکمل فوکس عوام کو فوری انصاف کی فراہمی،پولیس اور قانون پسند عوام کے مابین فاصلوں کو ختم کرنے پر رہا،جس کے لئے ڈی پی او دفترمیں روزانہ کی بنیاد پر طویل دورانیہ کی کھلی کچہری لگا کر اسے ”پولیس پبلک مشاورت فورم“ بنا رہے ہیں جبکہ بہاولپور کے دور دراز علاقوں میں خود جا کر کھلی کچہری کے ذریعے پولیس کو قانون پسند عوام کے سامنے جوابدہ بنا رہے ہیں،گزشتہ روزڈی پی اومحمد فیصل کامران نے یزمان سرکل کے چاروں تھانوں کی جو کھلی کچہری تھانہ ہیڈ راجکاں میں منعقد کی اس کی مثبت بازگشت ابھی تک سنائی دے رہی ہے، کھلی کچہریوں میں جہاں پر موسمی حوالے سے عوام کو سہولیات فراہم کی جاتی ہیں وہاں پر کورونا سے بچاؤ کے حوالے سے ماسک لگانے،سماجی فاصلے کے ایس اوپیز پر مکمل عمل کروایا جا رہاہے،کھلی کچہریوں میں ڈی پی او متعلقہ پولیس آفیسرز کو احکامات جاری کرنے کے بعد درخواست دہندہ کو اپنا پرسنل آفس نمبر نوٹ کرواتے ہیں۔ ڈی پی او کی تعیناتی کے 15 دنوں میں ڈی پی اونے دفتر کی روزانہ کی بنیاد پر لگنے والی کھلی کچہری میں مجموعی طور پر467 افراد کی درخواستوں پر نہ صرف قانونی کارروائی کے احکامات جاری کئے بلکہ قانونی کارروائی ہونے کو یقینی بھی بنایا،تھانہ ہیڈ راجکاں میں لگنے والی بہاولپور کی پولیس ہسٹری کی منفرد کھلی کچہری میں عوامی شکایات پر احکامات کا اجراء اس کے علاوہ ہے۔

فیصل کامران

مزید :

ملتان صفحہ آخر -