راجن پور:غیر ذمہ داری پر تین پولیس اہلکار نوکری سے فارغ

راجن پور:غیر ذمہ داری پر تین پولیس اہلکار نوکری سے فارغ

  

راجن پور، جام پور(نامہ نگار، نمائندہ پاکستان)بنگلہ اچھا کچہ کے علاقہ میں پولیس اہلکاروں کے اغواء میں غفلت اور غیر زمہ داری کا مظاہرہ کرنے والے3 پولیس(بقیہ نمبر26صفحہ6پر)

 اہلکار ڈی پی او راجن پور فیصل گلزار کی جانب سے محکمانہ انکوائری میں قصور وار ثابت ہونے پر نوکری سے فارغ کردئیے گئے تفصیلات کے مطابق 26 اپریل کو کچہ کے علاقہ میں قائم پولیس پکٹ کے قریب سے کچہ کے ڈاکوؤں کی جانب سے دو پولیس اہلکاروں کانسٹیبل عرفان منظور اور محمد ارشد کو اغواء کیا گیا تھا جنہیں پولیس کی جانب سے کامیاب کچہ آپریشن کے بعد بازیاب کروایا گیا تھا اس واقعہ کے بعد ڈی پی او راجن پور فیصل گلزار کی جانب سے زمہ داروں کے تعین کے لیے محکمانہ انکوائری کروائی گئی۔ انکوائری میں بنگلہ اچھا کچہ پکٹ جیون موڑ سے وقوعہ کے روز غیر حاضر ہونے والے انچارج پکٹ اے ایس آئی عبدالرحمان 124/GD اور افسران بالا کو اطلاع دیئے بغیر کچہ ایس او پیز کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پولیس پکٹ جیون موڑ چھوڑنے والے کانسٹیبلز عرفان منظور اور محمد ارشد قصور وار ثابت ہوئے جن کی غفلت،غیر زمہ دارانہ رویے،پکٹ سے غیر حاضری اور ڈی پی او راجن پور کی جانب سے جاری کردہ کچہ ایس او پیز کی خلاف ورزی کی وجہ سے ملازمان کے اغواء کا وقوعہ پیش آیا۔ ڈی پی او راجن پور فیصل گلزار کی جانب سے قصور واروں کو نوکری سے فارغ کر دیا گیا۔ اس موقع پر ڈی پی او راجن پور فیصل گلزار کا کہنا تھا کہ محکمہ پولیس میں جن پولیس اہلکاروں کی غفلت کی وجہ سے محکمہ کی ساکھ کو نقصان پہنچے ایسے اہلکاروں کی محکمہ میں کوئی جگہ نہیں اور ایسے ملازمین کے خلاف سخت محکمانہ کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ کچہ میں پولیس پکٹس پر تعینات پولیس اہلکاروں کی حفاظت کے لیے ایک جامع ایس او پی مرتب کی گئی ہے جس پر عملدرآمد کو ہر صورت یقینی بنایا جاتا ہے۔ پولیس اہلکاروں کو کچہ پکٹس پر تعیناتی سے قبل مکمل بریفنگ دی جاتی ہے اور تمام ملازمان کی فائر پریکٹس کی جاتی ہے۔ ڈی پی او راجن پور فیصل گلزار کا مزید کہنا تھا کہ کچہ پکٹس پر تعینات پولیس اہلکاروں کی جانب سے آئندہ اگر غفلت اور غیر زمہ داری کا مظاہرہ کیا گیا تو ان کے لیے کوئی معافی نہ ہے اور ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والے پولیس اہلکاروں کے خلاف سخت محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔

بنگلہ اچھا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -