چارسدہ ہسپتال میں گذشتہ تین دن سے پانی کا بحران

  چارسدہ ہسپتال میں گذشتہ تین دن سے پانی کا بحران

  

چارسدہ(بیورورپورٹ)چارسدہ ہسپتال میں گذشتہ تین دن سے پانی کا بحران,شدید گرمی میں مریض بلبلا اٹھے باتھ روم گندگی سے بھر  گئے پانی کا بور خراب ہونے کے باوجود انتظامیہ بروقت ٹھیک کرنے میں ناکام رہا لوگ بازار سے بوتلوں میں مہنگا پانی خریدنے پر مجبور ہوچکے ہیں تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چارسدہ میں گذشتہ تین روز سے پانی کا مین بور خراب ہونے کے باوجود انتظامیہ بروقت ٹھیک کرنے میں ناکام رہا جس کی وجہ سے مریض اور چیک اپ کیلئے آنے والوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے مریض بلبلا اٹھے ہیں پانی نہ ہونے کی وجہ سے ہسپتال کے باتھ روم گندگی سے بھرے پڑے ہیں ہسپتال میں داخل مریضوں کو وارڈ میں ٹھہرانا ناممکن ہوچکا ہے داخل مریض اور تیمارداری پر مامور مریضوں کے رشتہ دار بازار سے مہنگے داموں پانی خریدنے پر مجبور ہوچکے ہیں اس حوالے سے سیاسی و سماجی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے کہ ہسپتال انتظامیہ میں تبدیلی کے بعد بنیادی سہولیات کی فراہمی اولین ترجیح ہونی چاہئیے مگر یہاں شدید گرمی کے اس موسم میں پانی کی فراہمی بھی ممکن نہیں بنا سکی جس سے عوام میں شدید اشتعال پایا جاتا ہے انہوں نے مطالبہ کیا کہ آئے روز صحت سہولیات کی فراہمی کے بلند بانگ دعوے کئے جاتے ہیں مگر ان دعووں پر عمل کہیں بھی نظر نہیں آرہا ہے ضلع میں دو صوبائی وزراء, 2 ایم این ایز  اور حکومتی جماعت کے کئی ایم پی ایز ہونے کے باوجود ضلع کے اس واحد بڑے ہسپتال کی یہ حالت ہونا سمجھ سے بالاتر ہے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -