ایس او پیز کے تحت تعلیمی ادارے کھل گئے

ایس او پیز کے تحت تعلیمی ادارے کھل گئے

  

وفاقی حکومت کے فیصلے کے مطابق خیبرپختونخوا میں کورونا ایس او پیز کے تحت تعلیمی ادارے طویل چھٹیوں کے بعد دوبارہ کھل گئے ہیں، اگرچہ تعلیمی رونقیں مکمل طور پر بحال نہیں ہوئیں تا ہم مختلف مدارج کے طلبہ اور طالبات کی آمد و رفت کا سلسلہ ضرور شروع ہو گیا ہے۔ یونیورسٹی اور کالجز کے بعد بعض اضلاع کے  سکولز میں بھی تعلیم و تدریس جاری ہے، جن اضلاع میں کورونا کی شرح پانچ فیصد سے زائد ہے وہاں تعلیمی سرگرمیاں تاحال موقوف ہیں  تاہم  وزارت تعلیم اس حوالے سے دو تین روز میں فیصلہ کرنے والی ہے۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ کورونا سے متاثر ہونے والے مختلف کلاسوں کے امتحانات کے دوبارہ انعقاد کا حتمی فیصلہ تا حال نہیں کیا جا سکا البتہ صوبائی حکومت نے کورونا وائرس کے باعث کلاس لینے سے محروم اسکول کے بچوں کو امتحان کی تیاری کے لیے ایپلی کیشن ضرور متعارف کروادی ہے۔ اس حوالے سے صوبائی وزیر تعلیم شہرام خان ترکئی  کا کہنا تھا کہ بچوں کی آسانی کے لیے 'ن' نامی کمپنی محدود کورس کی تیاری کر وائے گی۔ طلبہ سہ پہر 3 بجے سے رات 10 بجے تک اس ایپ سے فری آن لائن کلاسیں لے سکتے ہیں، آن لائن کورس ریکارڈ بھی ایپ پر موجود ہوگا۔ کہا جا رہا ہے کہ مجموعی طور پر  صوبے میں 34 ہزار اسکول ہیں، حکومت ان تمام اسکولوں کو ابھی پوری طرح ٹیکنالوجی فراہم نہیں کرسکتی۔

خوش آئند امر یہ ہے کہ طویل عرصے بعد صوبائی حکومت بالی ووڈ کے لیجنڈ اداکاردلیپ کمار اور راج کپور کی آبائی رہائش گاہوں کا باقاعدہ قبضہ   لینے میں کامیاب ہو گئی ہے اور خیبر پختونخوا کے آثار قدیمہ اور میوزیم ڈائریکٹوریٹ نے پشاور  میں واقع ان گھروں کی از سر نو تزین و آرائش کا فیصلہ بھی کیا ہے اور اس مقصد کے لئے ان مکانات کو قومی یاد گار (ورثہ) کے طور پر محفوظ کیا جائے گا۔ یہ پیشرفت ڈپٹی کمشنر پشاور کی جانب سے اولڈ سٹی ایریا میں قائم دونوں جائیدادوں کی ملکیت محکمہ آثار قدیمہ کو منتقل کرنے کا نوٹی فکیشن جاری کرنے کے بعد سامنے آئی۔ یاد رہے کہ صوبائی حکومت نے  ستمبر 2020ء میں اعلان کیا تھا کہ وہ دونوں مکانات کا قبضہ حاصل کرکے اسے بحال کرنے کے بعد میوزیم میں تبدیل کر دیا جائے گا۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ محکمہ آثار قدیمہ نے دلیپ کمار اور راج کپور کے آبائی گھر خریدنے کے لئے 2کروڑ 35 لاکھ روپے کی منظوری بھی دی، کہا جا رہا ہے کہ دونوں گھر انتہائی خستہ حال ہیں، جنہیں  میوزیم میں تبدیل کرنے سے قبل ان کی بحالی اور تزئین و آرائش کا آغاز کیا جائے گا، جبکہ اس حوالے سے  دونوں  فنکار خاندانوں کے اراکین سے بھی بحالی کے سلسلے میں رابطہ ممکن بنایا جائے گا۔ معلوم ہوا ہے کہ ان گھروں کی ملکیت کی منتقلی کے لیے ڈھکی ڈلگاران کے علاقے میں واقع راج کپور کی حویلی کی قیمت ایک کروڑ 15لاکھ اور محلہ خداداد میں دلیپ کمار کے آبائی گھر کی قیمت 72 لاکھ  روپے مقرر کی گئی تھی۔دونوں جائیدادوں کی قیمت 15لاکھ روپے فی مرلہ طے کی گئی ہے۔

افغانستان میں امن دشمن کارروائیاں مسلسل جاری ہیں اور مختلف علاقوں میں بم دھماکوں کا سلسلہ تھم نہیں پایا، ابھی گزشتہ روز افغان صوبے بدغیس میں سڑک کنارے بم دھماکے میں 11 افراد جاں بحق ہوگئے، جن میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں کہا جا رہا ہے کہ  حملہ طالبان کی کارروائی ہے تاہم طالبان سمیت ابھی تک کسی  بھی گروپ نے حملے کی باقاعدہ ذمہ داری قبول نہیں کی، افغانستان میں امریکی فوج کے انخلا کے بعد سے ملک بھر میں بم دھماکوں اور پرتشدد کارروائیوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے، اب تک  متعدد افراد ہلاک و زخمی ہوچکے ہیں۔ یہ خبر بھی آئی ہے کہ  غیر ملکی افواج کے لئے کام کرنے والے افغان شہریوں کو افغان طالبان نے یقین دہانی کروائی ہے کہ غیر ملکی افواج کے انخلا کے بعد وہ اپنے وطن میں محفوظ رہیں گے۔ افغان طالبان کی طرف سے سامنے آنیوالے بیان میں کہا گیا ہے کہ افغان باشندے جو غیر ملکی افواج کیلئے کام کرتے تھے انہیں فوجی انخلا کے بعد اپنا ملک ترک نہیں کرنا چاہیے کیونکہ وہ بالکل محفوظ رہیں گے۔ دہشت گرد تنظیم اسلامک اسٹیٹ یا داعش انہیں پریشان نہیں کرے گی۔  عشروں سے جنگ، جارحیت اور تشدد کے شکار  افغانستان میں گزشتہ بیس سالوں کے دوران طالبان کی مقامی افغان باشندوں نے سرزمین پر تعینات امریکی اور دیگر بین الاقوامی فورسز کیلئے بطور مترجم، سکیورٹی گارڈز اور دیگر شعبوں میں ان کیلئے امدادی خدمات انجام دی ہیں۔اب ان مقامی افغان باشندوں کو سخت خدشات لاحق ہیں کہ انکے ملک سے غیر ملکی افواج کے مکمل انخلا کے بعد انہیں طالبان سے شدید خطرات ہوں گے کیونکہ طالبان کی طرف سے انتقامی کارروائی کے  قوی امکانات موجود ہیں۔

ایک خوش کن خبر یہ بھی ملی ہے کہ  افغانستان کی طرف سے وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے اس بیان کا خیر مقدم کیا گیا ہے جس میں انہوں نے غیر ملکی افواج کے نکلنے سے پہلے افغانستان میں ایک سیاسی حل کے لئے کوششیں تیز کرنے کا اعلان کیا تھا۔ پاکستان کے لئے افغان صدر کے نمائندہ خصوصی عمر داودزی کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ افغان عوام کو شدت سے عملی اقدامات اور نتیجہ خیز اقدامات کا انتظار ہے۔ اسی تناظر میں امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے افغان عمل پر بات چیت کے لئے ایک نئے دورے  اور  کابل میں افغان رہنماوں سے مذاکرات شروع کئے ہیں۔      وہ افغانستان کے علاوہ قطر اور خطے کے دیگر ممالک کا دورہ کرینگے،  جہاں طالبان اور افغان حکومتی مذاکراتی ٹیم کے ساتھ ملاقاتوں میں ان پر بین الافغانی مذاکرات میں پیش رفت پر زور دینگے۔

، رونقیں مکمل طور پر بحال نہ ہو سکیں 

پانچ فیصد سے زائد شرح والے اضلاع میں سکول کالج تا حال بند، امتحانات کے لئے ایپ متعارف

دلیپ کمار اور راج کپور کے تاریخی گھروں کا قبضہ حکومت کو مل گیا، میوزیم بنانے کی تیاری شروع

افغانستان میں امن دشمن کارروائیاں جاری، زلمے خلیل زاد نئے امن مشن پر روانہ

مزید :

ایڈیشن 1 -