نفرت انگیز تقریر کیس میں جاوید لطیف کی ضمانت منظور، دو دو لاکھ روپے کے دو مچلکے جمع کرانے کا حکم

نفرت انگیز تقریر کیس میں جاوید لطیف کی ضمانت منظور، دو دو لاکھ روپے کے دو ...
نفرت انگیز تقریر کیس میں جاوید لطیف کی ضمانت منظور، دو دو لاکھ روپے کے دو مچلکے جمع کرانے کا حکم

  

لاہور ( ڈیلی پاکستان آن لائن) سیشن کورٹ لاہور نے مسلم لیگ ن کے رہنما جاوید لطیف کی نفرت انگیز تقریر کیس میں ضمانت منظور کر لی ۔

نجی ٹی وی لاہور نیوز کے مطابق جاوید لطیف کی درخواست ضمانت پر سیشن کورٹ لاہور میں سماعت ہوئی، عدالت نے دو ، دو لاکھ روپے کے دو ضمانتی مچلکوں کے عوض جاوید لطیف کی ضمانت منظور کر لی ۔

اس سے قبل آج صبح ماڈل ٹاون کچہری میں لیگی رہنما جاوید لطیف کے خلاف ریاست مخالف بیانات کے کیس کی سماعت ہوئی تھی ، سماعت کے دوران تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا کہ چالان پراسکیوشن میں جمع کرایا تھا جس پر اعتراضات لگے ہیں، چالان کی تکمیل میں مزید وقت درکار ہے۔تفتیشی افسر نے عدالت سے استدعا کی کہ ملزم کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کا حکم دیا جائے۔عدالت نے تفتیشی افسر کی استدعامنظور کرتے ہوئے لیگی رہنما  کے جوڈیشل ریمانڈ میں 23 جون تک توسیع کی تھی ۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق عدالت میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید لطیف کا کہنا تھا کہ مجھے ملک کی فکر ہے اپنی نہیں، ملک کا نظام تباہ ہو گیا، آئے روز ٹرین حادثات ہو رہے ہیں، حکومت کسی چیز کی ذمہ داری لینے کو تیار نہیں۔

واضح رہے کہ جاوید لطیف کو 27 اپریل کو اشتعال انگیز تقریر کے کیس میں سیشن عدالت سے ضمانت میں توسیع نہ ہونے پر گرفتار کیا گیا تھا ۔  جاوید لطیف عدالتی فیصلہ آنے سے قبل ہی عدالت سے چلے گئے تھے جس کے باعث سی آئی اے نے فوری کارروائی کرتے ہوئے انہیں سگیاں پل سے گرفتار کیا تھا۔

مزید :

قومی -