وکٹوریہ ہسپتال،نرسنگ سپر نٹنڈنٹلوٹ مار میں سب سے آگے

وکٹوریہ ہسپتال،نرسنگ سپر نٹنڈنٹلوٹ مار میں سب سے آگے

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ بیورو) بہاول وکٹوریہ ہسپتال کی نرسنگ سپرنٹنڈنٹ نے مبینہ کرپشن کی انتہاکردی موبائل فون نقدی کپڑوں کے سوٹ تحائف کے طورپروصول کرنے کاانکشاف ہوا ہے، تبادلہ کراکرجانیوالی نرسوں 

(بقیہ نمبر20صفحہ6پر)

سے ریلیو کرنے کے عوض نجی کالج کیلئے کرسیوں کی ڈیمانڈ عیدملین پارٹی کے نام پربھی لاکھوں روپے کاغبن کیا،باوثوق ذرائع نے بتایاہے کہ ضلعی ہیڈکوارٹر ہسپتال لودھراں میں جعلی اسناد پرنرسوں کی بھرتیوں کے عوض کروڑوں روپے اکھٹے کرنے کے سیکنڈل میں ملوث نرسنگ سپرنٹنڈنٹ صفیہ روحی کو بہاول وکٹوریہ ہسپتال تعینات کردیاگیاہے ذرائع نے انکشاف کیاہے کہ موصوفہ نے بہاول وکٹوریہ ہسپتال میں تعینات ہوتے ہی اپنی کارروا ئیاں شروع کردی ہے نرسوں کے تبادلوں کے بعدریلیو کرنے کے عوض10 سے15 ہزار روپے کی رشوت لی جاتی ہے بتایاگیاہے عیدگاہ ریلوے روڈ پرقائم احمدحسن ویلڈنگ ورکس سے دولوہے کی کرسیوں کی رسید مبلغ10500 روپے کی بنواکرجمع کرانے کاحکم دیاجاتاہے پھروہی کرسیاں تیارکراکر وہ اپنے نجی نرسنگ کالج میں لے جاتی ہے ذرائع نے بتایاہے کہ صفیہ روحی نے کسی بھی کام کے عوض رشوت کاریٹ10000 روپے مقررکررکھاہے اس سے کم رشوت بھی نہ لیتی ہے اس کے علاوہ کپڑوں کے سوٹ موبائل فون جیولری اوردیگرتحائف بھی وصو ل کرنااس کاوطیرہ ہے۔ متاثرہ نرسز نے ان کے نام صیغہ راز میں رکھنے کے وعدہ پربتایاکہ ان سے میس کیلئے4000 روپے فی کس ماہانہ وصول کیے جاتے ہیں لیکن میس میں کھاناانتہائی ناقص ہوتاہے وہ میس فیس جمع کرانے کے باوجود مجبوراً بازار سے کھانامنگواتی ہیں۔ جونرسز میس سے کھاناکھاتی ہیں انہیں صرف دوروٹیاں دی جاتی ہیں۔ اضافی روٹیاں مانگے پر ڈانٹ دیاجاتاہے۔ انہوں نے بتایاکہ نرسز کی ایک سال میں 24 استحقاقی چھٹیاں ہوتی ہیں لیکن رشوت دیئے بغیر ایک بھی چھٹی نہ ملتی ہے اس طرح نرسز کوبلیک میل کرنے کیلئے ان کی مشکل ڈیوٹیاں لگادی جاتی ہیں۔ ڈیوٹی تبدیل کرانے کیلئے علیحدہ سے رشوت دیناپڑتی ہے۔ انہوں نے بتایاکہ گزشتہ عیدکے موقع پرعیدملن پارٹی کے نام پرفی کس1000 روپے وصول کیے گئے ہیں۔ لیکن آج تک عیدملن پارٹی نہ کرائی گئی ہے۔ متاثرہ نرسوں نے حکام بالاسے سخت نوٹس لینے کامطالبہ کیاہے۔ اس حوالے سے سپرنٹنڈنٹ نرسنگ صفیہ روحی نے کہاکہ تمام الزامات بے بنیاد ہیں ان کاحقیقت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -