عالمی یوم ماحولیات پر سیمینار، ماحولیاتی اسٹیج ڈرامہ اور میوزک شو 

عالمی یوم ماحولیات پر سیمینار، ماحولیاتی اسٹیج ڈرامہ اور میوزک شو 

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) عالمی یوم ماحولیات کے موقع پر اتوار کے روز فروزاں،ادارہ تحفظ ماحولیات سندھ(سیپا)  کے اشتراک اور اینگرو کے تعاون سے آرٹس کونسل آف پاکستان میں سیمینار، اسٹیج ڈرامہ اور لائیو میوزک شو منعقد کیا گیاجس کے مہمان خصوصی صوبائی وزیر ماحولیات، موسمیاتی تبدیلی اور ساحلی ترقی محمد اسماعیل راہو تھے۔  عالمی یوم ماحول کے نعرے رہنے کے لیے بس یہی زمین ہے کے عنوان پر منعقدہ سیمنار سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر ماحولیات اسماعیل راہو نے کہا کہ آبی اور فضائی آلودگی ماحول اور انسانی صحت کے لیے سب سے زیادہ نقصان دہ ہیں کیونکہ یہ دونوں براہ راست ماحول اور انسانی صحت کو نقصان پہنچاتی ہیں۔ اُن کا کہنا تھا کوئی بھی ماحولیاتی مسئلہ اکیلے حل نہیں کیاجاسکتا ہے جس کے لیے ضروری ہے کہ تمام متعلقین مل جل کر اُسے پائیدار بنیادوں پر حل کریں۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ صنعتی طور پر ترقی یافتہ اقوام نے ابتداء میں تو ماحول کو خوب نقصان پہنچایا تھا تاہم معاملے کی نزاکت کو بھانپتے ہوئے اُنہوں نے پھر ایسے صنعتی پیداوار طریقے اختیار کیے جن سے ماحول کوکم سے کم نقصان ہو جبکہ ہماری طرح ترقی کے پذیر ممالک کو اپنے ماحولیاتی امور محفوظ کرنے کے لیے ابھی بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے۔ اس سے قبل محکمہ ماحولیات، موسمیاتی تبدیلی اور ساحلی ترقی حکومت سندھ محمد حسن اقبال نے اپنے خطاب میں کہا کہ ماحولیاتی قوانین کے موثر نفاذ میں عوامی آگہی اہم کردار ادا کرتی ہے۔ اگر لوگوں میں شعور ہوگا تو وہ ماحولیاتی قوانین کے سختی کے ساتھ نفاذ کو خوش آمدید کہتے ہیں جبکہ دوسری صورت میں ماحولیاتی قانون نافذ کرنے والے اداروں کو مزاحمت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ سمینار کے آغاز میں سیپا کے ڈائریکٹر ٹیکنیکل وقار حسین پھلپوٹو نے اپنے خطاب میں ادارے کے فرائض، ذمہ داریوں اور کارکردگی پر روشنی ڈالی اور کہا کہ اپنے محدود وسائل کے ساتھ سیپا نے اپنی افرادی قوت ترجیحی طور پر صنعتی اور طبی آلودگی کی روک تھام کے لیے لگا رکھی ہے تاکہ لوگوں کی صحت اور ماحول دونوں کی بیک وقت حفاظت یقینی بنائی جاسکے۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -