عالمی بینک نے پاکستان کیلئے امداد کی منظوری دیدی

عالمی بینک نے پاکستان کیلئے امداد کی منظوری دیدی
عالمی بینک نے پاکستان کیلئے امداد کی منظوری دیدی

  

اسلام آ باد (مانیٹرنگ ڈیسک،آئی ا ین پی) عالمی بینک نے پاکستان کو 258 ملین ڈالرز امداد کی منظوری دے دی ہے۔ پاکستان کے لیے رقم کی منظوری عالمی بینک کے بورڈ آف ایگزیکٹو ڈائریکٹرز نے دی۔ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ یہ رقم پاکستان میں بنیادی صحت کے نظام میں بہتری کے لیے خرچ ہو گی۔کنٹری ڈائریکٹر ورلڈ بینک کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں صحت کی سہولیات تک بہتر رسائی کیلئے اصلاحات کی جائیں گی، صوبائی ہیلتھ سسٹم کومضبوط بنانے میں بھی مدد دی جائے گی، جب کہ ہیلتھ کیئر کوریج، اسٹاف اور دواں کی سپلائی بہتربنائی جائے گی۔یہ پروگرام انسانی فلاح و بہبود کیلئے کی جانے والی سرمایہ کاری کی تکمیل کرتا ہے اور صحت سے متعلق اصلاحات پر مبنی ہے، اس کا مقصد صحت کی خدمات کے معیار اور اس تک مساوی رسائی کو بہتر بنانا ہے۔عالمی بینک کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ اس پروگرام کا مقصد خاص طور پر ان افراد کو فائدہ پہنچانا ہے جو قومی اور علاقائی سطح پر صحت سے متعلق اقدامات سے مستفید ہونے میں پیچھے ہیں۔عالمی بینک ڈائریکٹر برائے پاکستان، ناجی بینہسین نے کہا کہ پاکستان بنیادی صحت کی خدمات تک رسائی کو یقینی بنانے کیلئے صحت سے متعلق اصلاحات، خاص طور پر حمل اور ولادت کے دوران بچوں اور خواتین کے لیے اقدامات میں مسلسل ترقی کر رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس پروگرام کا بنیادی مقصدملک کے انسانی سرمائے کی تعمیر اور اس کے شہریوں کے لیے صحت اور غذائیت کے نتائج کو بہتر بنانا۔یہ پروگرام صحت کے3 اہم شعبوں میں اصلاحات پر توجہ مرکوز کرے گا جن میں درج ذیل اصلاحات شامل ہیں۔صحت کی دیکھ بھال اور ضروری خدمات کا معیار مناسب کرنا، عملہ، آلات اور ادویات کو یقینی بنانے اور ہنگامی اور اعلیٰ سطح کی سروسز کو تیز کرنے کے لیے مریضوں کے لیے ریفرل سسٹم وسیع کیا جائے۔دستیاب آلات اور ضروری ادویات کے حقیقی وقت کی نگرانی کے ذریعے بنیادی صحت سے متعلق خدمات کی نگرانی اور انتظام کو مضبوط بنانے کے لیے گورننس اور احتساب پر توجہ دی جائے۔پروگرام میں صوبائی حکام کیلئے ایک مرکزی معلوماتی پلیٹ فارم شامل ہے تاکہ سرکاری اور نجی صحت سے متعلق سہولیات کی فراہمی میں فرق کا اندازہ لگایا جاسکے۔صحت کی دیکھ بھال کیلئے مالی تعاون بنیادی صحت کے مراکز کے مالی انتظامات کو بہتر بنانے اور اخراجات کی نگرانی کرے گا جو صحت سے متعلق بجٹ کی پیش گوئی کے لیے معاون ثابت ہوگا۔پروگرام کے ٹاسک ٹیم لیڈر ہینن ہینن پائن نے کہا کہ این ایچ ایس پی وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے لیے اسباق کے تبادلے اور پائیدار صحت کی مالی امداد، اعلیٰ معیار اور ضروری خدمات کی کوریج کے حصول میں تعاون کے لیے ایک قومی فورم تشکیل دیتا ہے۔یہ پروگرام صوبائی بنیادی ہیلتھ سروسز کے نظام میں بہتری کے ذریعے تمام کمیونٹیز کو فائدہ پہنچائے گا، ان میں خاص طور پر وہ شامل ہوں گے جو تقریباً 20 اضلاع میں صحت اور غذائیت کی خدمات تک کم سے کم رسائی حاصل کر پائے ہیں۔این ایچ ایس پی کو انٹرنیشنل ڈویلپمنٹ فنڈز ایسوسی ایشن کی جانب سے 25 کروڑ 80 لاکھ روپے کی مالی معاون فراہم کی گئی ہے،8 کروڑ 20 لاکھ ڈالرز کی 2گرانٹس عالمی مالیاتی سہولت برائے، خواتین، بچے اور بزرگ کی جانب سے کی جائے گی،اس میں 4 کروڑ ڈالر زکی گرانٹ بھی شامل ہے جو عالمی بحران کے دوران بنیادی ہیلتھ سروسز کے تحفظ کیلئے استعمال کی جائے گی۔

مزید :

قومی -