کاشتکار مارچ کے دوسرے ہفتے میں آبپاشی کریں ‘ ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ

کاشتکار مارچ کے دوسرے ہفتے میں آبپاشی کریں ‘ ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ

فیصل آباد (اے اےن اےن ) ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد کے شعبہ گندم کے زرعی ماہرین نے کاشتکاروں کو سفارش کی ہے کہ وہ گندم کی فصل میں سٹے نکلنے کے بعد دانہ بھرائی کے موقع پر مارچ کے دوسرے پندرھواڑے میں آبپاشی کریں ۔یہ آبپاشی اس وقت کی جاتی ہے جب دانہ بھرائی ہورہی ہو یا دانہ دودھیا حالت میں ہو ۔ اگر اس موقع پر پانی نہ دیا جائے تو دانہ پانی کی کمی اور گرمی کی وجہ سے پچک کر کمزور اور پتلا رہ جاتا ہے جس سے پیداوار میں کمی واقع ہوجاتی ہے ۔گندم کی فصل میں یہ مرحلہ کاشت کے 125سے130دن بعد آتا ہے ۔جب موسم اچانک گرم ہوجائے اور فصل پچھیتی کاشت کی گئی ہو تو مارچ کے آخر میں یا اپریل کے شروع میں فصل کی آبپاشی کریں ۔

اس وقت دانہ تقریباً گوندھ نما حالت میں ہوتا ہے۔ اس مرحلہ پر موسم کو مدنظر رکھ کر ہلکی آبپاشی کریں کیونکہ اگر فصل گر جائے تو پیداوار میں کمی واقع ہوجاتی ہے ۔ حالات اور بارشوں کو مدنظر رکھ کر فصل کی آخری آبپاشی کریں۔گندم پر سست تیلہ کے حملے کی صورت میں زرعی زہریں ہرگز استعمال نہ کریں کیونکہ ان کے اثرات اچھے نہیں ہوتے ۔ زہر پاشی سے ماحول کا آلودہ ہونا ، صحت کے مسائل اور مفید کیڑوں کا ختم ہونا شامل ہے ۔ تیلہ کے حملہ کی صورت میں فصل پر پانی کا سپرے کریںیا رس کھینچیں۔ کانگیاری سے متاثرہ پودوں کو نکالنے کے لیے فصل کا باقاعدہ معائنہ جاری رکھیں ۔ بیمار پودوں کو نکال کر زمین میں دبا دیں تاکہ جرثومے کھیت میں نہ پھیل سکیں۔ فصل پر چوہوں کے حملہ کی صورت میں ان کی تلفی کے لیے زنگ فاسفائیڈ گولیاں یا ڈائٹیاگیس کی ٹیکیاں استعمال کریں۔ گندم کی نئی منظور شدہ اقسام کا گھریلو پیمانے پر خالص بیج تیار کرنے کے لیے منتخب کھیت سے غیر اقسام کے پودوں کو نکال دیں ۔

مزید : کامرس