مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پارلیمانی انتخابات کے خلاف احتجاجی مظاہرے شروع

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پارلیمانی انتخابات کے خلاف احتجاجی مظاہرے شروع


سرینگر (کے پی آئی) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پارلیمانی انتخابات کے خلاف احتجاجی مظاہرے شروع ہوگئے ہیں ۔پارلیمانی انتخابات کے سلسلے میں حریت کانفرنس کی جانب سے پہلی الیکشن بائیکاٹ مہم کے تحت حاجن اور نائیدکھئے میں حریت کانفرنس جموں و کشمیر کے لیڈران کی طرف سے جلوس برآمد کرنے کے بعد پرتشدد جھڑپیں ہوئیں ۔ شبیر احمد شاہ ، نعیم احمد خان ، مشتاق الاسلام اور دیگر لیڈران نے یہاں مرکزی جامع مسجد سے ایک جلوس کی قیادت کی ۔ اس سے قبل شبیر احمد شاہ اور ان کے رفقاء اچانک مقامی جامع مسجد میں نمودار ہوئے اور انہوں نے یہاں جمع لوگوں سے خطاب کیا ۔ نماز جمعہ کے فورا بعد شبیر احمد شاہ ، نعیم احمد خان ، مشتاق الاسلام ، شبیر احمد ڈار ، محمد یوسف نقاش تک نکالا گیا۔

اور محمد یاسین عطائی کی قیادت میں ایک جلوس جامع مسجد سے مین چوک سمبل تک نکالا گیا جس کے بعد حاجن قصبہ میں اچانک صورت حال بگڑ گئی کیونکہ نوجوانوں کی ٹولیوں نے سڑکوں پر نمودار ہو کر یہاں تعینات پولیس اور فورسز پر پتھراؤ شروع کر دیا ۔ طرفین کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ شروع ہونے کے بعد اس علاقہ میں تمام بازار بند ہو گئے جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی آمد و رفت بھی مسدود ہو کر رہ گئی ۔ پولیس اور فورسز نے پتھر پھینکنے والے نوجوانوں کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کا استعمال کیا ۔ نزدیکی قبصہ نائید کھئے میں بھی نماز جمعہ کے بعد پتھراؤ کا واقعہ پیش آیا جس کے دوران مشتعمل نوجوانوں نے پولیس اور فورسز پر نعرہ بازی کی جبکہ پولیس اور فورسز نے جواب میں آنسو گیس کے پھینکی جس کے نتیجے میں نائیدکھئے قصبہ میں بھی معمول کی سرگرمیاں متاثر ہوئیں

مزید : عالمی منظر