الیکشن کمیشن مکمل بااختیار ہے، عمران خان نے آئین کا مطالعہ نہیں کیا،رانا ثناءاللہ

الیکشن کمیشن مکمل بااختیار ہے، عمران خان نے آئین کا مطالعہ نہیں کیا،رانا ...

لاہور(آن لائن)صوبائی وزیر قانون وبلدیات رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ اصل مسلم لیگ صرف ایک تھی جس کے سربراہ قائداعظم تھے، 12اکتوبر کے بعد مسلم لیگ کے ٹکڑے کیے گئے، اب دوبارہ مسلم لیگ میاں نواز شریف کی قیادت میں منظم ہے، چوہدری شجاعت اور پرویز الٰہی اگر غیر مشروط دوبارہ پارٹی میں آجائیں تو معافی تلافی ہو سکتی ہے، شیخ رشید کو شامل ہونے کے لیے اپنے گناہوں کا کفارہ ادا کرنا ہو گا، مذاکراتی کمیٹی میں دونوں جانب اہم لوگ شامل ہیں، جنہوں نے سیز فائد کروانے میں اہم کردار ادا کیا ہے، تمام عسکری قوتوں کو مذاکرات کے حوالے سے آن بورڈ لینا چاہیے، طالبان کے ساتھ مذاکرات کے ذریعے معاملات حل ہو جائیں گے، اگر آپریشن کی نوبت آئی تو صوبے میں سکیورٹی کے فول پروف انتظامات موجود ہوں گے، الطاف حسین جوش خطابت میں کئی ایسے بیان دیتے ہیں جو وہ دوسرے دن واپس لے لیتے ہیں، الیکشن کمیشن مکمل بااختیار ہے، عمران خان نے آئین کا مطالعہ نہیں کیا، ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز پنجاب اسمبلی کے اجلاس کے موقعہ پر اسمبلی احاطے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، صوبائی وزیر نے کہا کہ جمہوریت کے منافی اور غیر آئینی بات قابل مذامت ہے، الطاف حسین جوش خطابت میں بعض اوقابت اس طرح کے بیانات دے دیتے ہیں جو وہ دوسرے دن واپس لے لیتے ہیں، فوج کودعوت دینے کے متعلق بیان بھی وہ واپس لے لیں گے، خواتین کو مکمل بااختیار بنانے کے لیے اس اجلاس میں قانون سازی کی جائے گی، اور خواتین کو فیصلہ کرنے کے مکمل اختیار دیئے جائیں گے، میاں نواز شریف اور پیر پگاڑا کے درمیان ملاقات اور مسلم لیگی دھڑوں کو متحد کرنے کے سوال کے جواب میں رانا ثناءاللہ نے کہا کہ مسلم لیگ اصل میں ایک ہی تھی جس کے سربراہ قائداعظم تھے، جن کے بعد مسلم لیگ کو دھڑوں میں تبدیل کیا گیا اور 12اکتوبر کے بعد آمریت کے سائے میں اس کے مزید ٹکڑے کیے گئے جس کے بعد میاں نواز شریف کی قیادت میں اس کو دوبارہ منظم کیا گیا

رانا ثناءاللہ

مزید : صفحہ آخر