خواتین پر تشدد کے خاتمے کیلئے قانون سازی کی جائے،روبینہ جمیل

خواتین پر تشدد کے خاتمے کیلئے قانون سازی کی جائے،روبینہ جمیل

لاہور(خبر نگار)حکومت پاکستان کو ملک میں خواتین کی تعمیر وترقی کے لئے مفت و معیاری تعلیم وتربیت کی سہولتوں کو عام کرنا چاہیے اور خواتین کو کام پر مساوی اْجرت اور ترقی کے مواقع یقینی بنائے اور خواتین کے خلاف تشدد اور دباؤ کی لعنت ختم کرنے کے لئے ملزمان کو مثالی سزا دلواکر سماج میں اس لعنت کا خاتمہ کرے۔ گھریلو کام کرنے والی خواتین اور بچیوں کے خلاف تشدد اور استحصال کے خاتمہ کے لئے موثر قانون سازی کی جائے یہ قرار دادیں بختیار لیبرہال لاہور میں خواتین کے عالمی د ن کے موقع پرآل پاکستان ورکرز کنفیڈریشن کے زیراہتمام خواتین کارکنوں کی کانفرنس میں ایک قرار داد کے ذریعے پیش کی گئیں اس کانفرنس سے روبینہ جمیل صدر، ہما عزیز ، سلٰمی یاسمین شعبہ خواتین ، ریحانہ ، عامرہ اور اْسامہ طارق سیکرٹری کنفیڈریشن ودیگر خواتین راہنماؤں اور بزرگ مزدور راہنماء خورشیداحمد جنرل سیکرٹری کنفیڈریشن نے خطاب کیا اس موقعہ پر وفاقی اور صوبائی حکومتوں سے پْرزورمطالبہ کیاگیا کہ وہ خواتین کارکنوں کو کام پر محفوظ وصحت مند حالات کار یقینی بنائیں لیبر قوانین کو عالمی ادارہ محنت کی توثیق کردہ کنونشنوں کے مطابق جلد مرتب کرکے عمل درآمد یقینی بنایاجائے اور خواتین لیبر انسپکٹر زاور خواتین کی سرکردگی میں پولیس سٹیشن قائم کیئے جائیں۔ عائلی عدالتوں میں جلد انصاف کے لئے خاتون ججز تعینات کی جائیں، اسمبلیوں اور فیصلہ ساز اداروں میں خواتین کو موثر نمائندگی دی جائے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1