مچھلی کی کھال سے جھلسنے والے افراد کا علاج کیا جانے لگا

مچھلی کی کھال سے جھلسنے والے افراد کا علاج کیا جانے لگا
مچھلی کی کھال سے جھلسنے والے افراد کا علاج کیا جانے لگا

  


برازیلیا(مانیٹرنگ ڈیسک) مچھلی کے گوشت کی بے بہا افادیت ہم سبھی جانتے ہیں لیکن برازیل میں ڈاکٹروں نے اس کی جلد سے آگ سے جھلسنے والے افراد کا علاج دریافت کرکے طب کی دنیا میں بھی اس کی افادیت منوا دی ہے۔ pbs.orgکی رپورٹ کے مطابق برازیل کے ڈاکٹر ملک کے دریا?ں میں پائی جانے والی تلاپیا نامی مچھلی کی جلد جھلسنے والے مریضوں کے زخموں کے اوپر لگا کر ان کا علاج کر رہے ہیں جس کے حیران کن نتائج سامنے آ رہے ہیں۔ تلاپیاکی جلد سے جھلس کر شدید زخمی ہونے جانے والے افراد کے زخموں کا علاج بھی ممکن ہو گیا ہے جو اس سے قبل اس بہتر انداز میں ممکن نہ تھا۔رپورٹ کے مطابق ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ تلاپیا کی جلد سے جھلس کر آنے والے دوسرے اور تیسرے درجے کے زخم بالکل ٹھیک ہو جاتے ہیں۔پلاسٹک سرجن اور برن سپیشلسٹ ڈاکٹر ایڈمر میشل کا کہنا تھا کہ ’’ترقی یافتہ ممالک میں جانوروں کی جلد آگ سے جھلسے افراد کے علاج میں کافی عرصے سے استعمال کی جا رہی ہے تاہم وہاں سور و دیگر جانوروں کی کھال استعمال کی جاتی ہے۔برازیل میں یہ تجربہ اب کیا گیا ہے جس میں تلاپیا مچھلی کی کھال استعمال کی گئی ہے اور اس کے دیگر جانوروں کی کھال کی نسبت بہتر نتائج سامنے آئے ہیں۔‘‘رپورٹ کے مطابق امریکہ میں جانوروں کی کھال اس علاج میں استعمال کرنے کے لیے فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن اور جانوروں کے حقوق کی تنظیموں کی منظوری لازمی ہے جس کی وجہ سے اس کی قیمت بہت بڑھ جاتی ہے۔ برازیل میں یہ تجربہ کامیاب ہونے پر امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ تلاپیا کی جلد کی امریکہ درآمد بھی شروع ہو جائے گی۔ ماہرین کے مطابق جھلس کر آنے والے زخموں کا یہ طریقہ علاج ترقی پذیر ممالک کے لیے انتہائی سستا اور فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4