ڈرگ ایکٹ کا نفاذ، فارما ٹریڈ سے منسلک شعبوں میں کام منجمد ہوگیا

ڈرگ ایکٹ کا نفاذ، فارما ٹریڈ سے منسلک شعبوں میں کام منجمد ہوگیا

ملتان ( سٹی رپورٹر) پاکستان کیمسٹ اینڈ ڈرگسٹ ایسوسی ایشن ملتان ڈویڑن کے چیئرمین محمد اختر بٹ نے کہا کہ پنجاب میں ڈرگ ایکٹ 2017 کے ظالمانہ نفاذ کے بعد پاکستان بھر میں فارما ٹریڈ سے ہر شعبے کا کاروبار منجمد ھو گیا جس میں وضاحت طلب بات یہ ہے ھیکے دیگر صوبوں میں ڈرگ ایکٹ 1976 کے تحت مینوفیکچرر اور تمام سٹیک ھولڈر کام کر رھے ہیں جب کے پنجاب میں تینوں صوبے ادویات بھیجنے (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

سے قاصر ہیں کیونکہ یہاں پر اگر کسی بھی فارما سیوٹیکل انڈسٹری کے خلاف کارروائی ھوتی ھے تو وہ ھو گی پنجاب ڈرگ ایکٹ 2017 کے تحت جبکہ دیگر صوبوں میں ڈرگ ایکٹ 1976 کے تحت کام ھو رھا غور طلب بات ھے جو دیگر صوبوں سے ادویات پنجاب میں آتی ہیں وہ مجبوری کے تحت روکیں گے کیونکہ وہ ڈرگ ایکٹ 2017 کو تسلیم نہیں کرتے جس سے پنجاب میں انسانی زندگی بچانے والی ادویات کی شدید قلت پیدا ھونے کا خطرہ ھے جس پر حکومت پنجاب کو فلفور سوچنا چاہیے اور ان کے تحفظات دور کرنے چاہئیں اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ حکومتی گوداموں میں سٹوریج کا حال برا ہے تو یہ سارا ظلم کیمسٹوں پر ہی کیوں ان کا محاسبہ کون کرے گا اور جو ادویات سرکاری اداروں کو سپلائی ھوتی ہیں ان کی صورت حال اس سے بہتر ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر