آئی پی پیز‘ وزارت پانی و بجلی کے مابین واجبات ادائیگی تنازع سنگین

آئی پی پیز‘ وزارت پانی و بجلی کے مابین واجبات ادائیگی تنازع سنگین

ملتان (سٹاف رپورٹر) انڈی پینڈنٹ پاور پروڈیوسرز (آئی پی پیز) اور وزارت پانی وبجلی کے مابین واجبات اور بقایاجات کی ادائیگی کا معاملہ شدت اختیار کرگیا ہے۔ آئی پی پیز نے 254 ارب روپے کی ادائیگی کیلئے 16 مارچ کی ڈیڈ لائن دے رکھی ہے۔ اب آئی پی پیز نے 254 ارب روپے کی وصولی کیلئے وزارت پانی وبجلی کے ذیلی ادارہ سنٹرل پاور پرچیز ایجنسی ( سی پی پی اے) کو قانونی نوٹس دیدیا (بقیہ نمبر58صفحہ12پر )

ہے۔ آئی پی پیز کا موقف ہے کہ سی پی پی اے نے پاور پروڈیوسرز سے بجلی خریدی مگر ادائیگی مقررہ مدت گزرجانے کے باوجود نہیں کی جس کے باعث 7 ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرنے والے پاور پروڈیوسرز بدترین مالی بحران کا شکار ہوگئے ہیں‘ دریں اثنا پرائیویٹ پاور انفراسٹرکچر بورڈ ( پی پی آئی بی) نے انڈی پینڈنٹ پاور پروڈیوسرز کو نوٹس جاری کرنے سے انکار کردیا ہے‘ وزارت پانی وبجلی نے واجبات و بقایاجات کی وصولی کیلئے آئی پی پیز کی جانب سے نوٹس بھجوانے اور اشتہار شائع کروانے پر شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے آئی پی پیز کو نوٹس جاری کرنے کی ہدایت کی تھی‘ تاہم پی پی آئی بی نے نوٹس جاری کرنے سے انکار کردیا ہے۔

واجبات ادائیگی تنازع

مزید : ملتان صفحہ آخر