ایڈوانس فیس وصول نہ کرنے کیخلاف تحقیقات کے احکامات

ایڈوانس فیس وصول نہ کرنے کیخلاف تحقیقات کے احکامات

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ نے پشاور کے نجی میڈیکل کالج کے فیل قرار دئیے جانے والے طالبعلم سے دو سال کی ایڈوانس فیس وصول کرکے واپس نہ کرنے کے خلاف دائررٹ پرمعاملے کی تحقیقات کرنے کے احکامات جاری کردئیے ہیں اور خیبرمیڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو ا نکوائری افسر مقرر کرتے ہوئے رپورٹ رجسٹرار کے حوالے کرنے کی ہدایت جاری کردی ہے عدالت عالیہ کے چیف جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ پرمشتمل دورکنی بنچ نے وسیم الدین خٹک ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائردرخواست گذارعلی احمر کی رٹ کی سماعت کی اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ درخواست گذار پشاورکے نجی میڈیکل کالج کاطالبعلم ہے جو سال اول میں ناکام رہا اوراس کے باوجود درخواست گذار سے سال دوم اورسال سوم کی تمام فیسیں ایڈوانس وصول کی گئی ہیں اوراب مذکورہ فیسیں واپس نہیں کی جارہی ہیں انہوں نے عدالت کو بتایاکہ نجی میڈیکل کالجوں نے اجارہ داری قائم کررکھی ہے اورمیڈیکل فیکلٹی بھی نہیں ہوتی اورلاکھوں روپے کی فیسیں غریب طلباء سے وصول کی جاتی ہیں اورپھرانہیں واپس نہیں کی جاتیں لہذارٹ پٹیشن منظورکرکے درخواست گذار کی فیس واپس کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں فاضل بنچ نے رٹ پٹیشن نمٹاتے ہوئے خیبرمیڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو ہدایت کی کہ انکوائری کرکے رپورٹ رجسٹرار کے حوالے کرے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر