حکومت مقبوضہ کشمیر میں جماعت اسلامی پر پابندی کیخلاف ہرفورم پر آواز اٹھائے، امیر العظیم

حکومت مقبوضہ کشمیر میں جماعت اسلامی پر پابندی کیخلاف ہرفورم پر آواز اٹھائے، ...

لاہور (نمائندہ خصوصی )امیرجماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب امیر العظیم نے کہا ہے کہ سینیٹ میں امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق کی جانب سے جماعت اسلامی مقبوضہ کشمیر پرپابندیوں کے خلاف پیش کی جانے والی قراردادکی منظوری خوش آئند امرہے۔ جماعت اسلامی جموں و کشمیر میں عوامی فلاح وبہبودکاکام کرنے کے ساتھ سیاسی اور سماجی سطح پر کشمیری عوام کے حقوق کے لیے جدوجہد کررہی ہے۔حکومت پاکستان مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم اورجماعت اسلامی پر پابندی کے خاتمے کے لیے اقوام متحدہ سمیت ہرفورم پر بھرپورانداز میں آواز اٹھائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزلاہور میں عوامی وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں ہندوستانی فوج نے ظلم وستم اور بربریت کی انتہاکردی ہے ۔چند دنوں میں درجن سے زائدمظلوم اور بیگناہ کشمیریوں کوشہیدکیاجاچکاہے ۔بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی مسلسل پامالی کررہاہے اورکشمیریوں سے ا ن کے جمہوری حقوق چھین رہا ہے۔بھارتی فورسز کی جانب سے نہتے کشمیریوں پر پیلٹ گنوں، گولیوں اور آنسوگیس کی شیلنگ نے ہندوستان کے بھیانک چہرے کو بے نقاب کردیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے اقوام متحدہ،عالمی برادری اور انسانی حقوق کاپرچارکرنے والی این جی اوز دانستہ اندھی،بہری اور گونگی ہوچکی ہیں۔بھارت ظلم کابازارمقبوضہ کشمیر میں زیادہ دیرتک قائم نہیں رکھ سکتا۔ہندوستان اپنی آٹھ لاکھ فوج کے ذریعے کشمیریوں کی آواز کو دبانے میں ابھی تک بری طرح ناکام رہاہے۔انہو ں نے کہاکہ آئے روز بھارت کی جانب سے پاکستان کی سرحدوں کی خلاف ورزی ایک معمول بن چکا ہے۔ ہندوستان کو اسی کی زبان میں جواب دیناچاہئے کیونکہ وہ پیارکی زبان نہیں سمجھتا۔امیر العظیم نے مزیدکہاکہ بھارت تحریک آزادی کی جدوجہد سے بوکھلاہٹ کاشکارہوکر کشمیریوں پرانسانیت سوزمظالم ڈھانے پراترآیاہے۔جموں وکشمیر پر غاصبانہ قبضے کومزیدجاری رکھنادرحقیقت ہندوستان کے لیے ایک ڈراؤناخواب بن چکا ہے۔وہ وقت اب دور نہیں جب مقبوضہ کشمیر بھی عملاً پاکستان کا حصہ بنے گا۔کشمیر کی آزادی تک پاکستان کے22کروڑ عوام اپنے کشمیری بہن بھائیوں کی اخلاقی،سفارتی اور سیاسی حمایت کاسلسلہ جاری رکھیں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1 /رائے