بھارتی حکومت کے دعوے فراڈ ثابت ہوئے ،آسام میں مزید 8مسلمان شہید

بھارتی حکومت کے دعوے فراڈ ثابت ہوئے ،آسام میں مزید 8مسلمان شہید

                                                    گوہاٹی(این این آئی)بھارتی ریاست آسام میں بوڈوقبائل کے تازہ حملے میں مزید مسلم شہید ہوگئے جس کے بعد اب تک شہید ہونے والوں کی تعداد 50ہوگئی ، متاثرہ علاقوں میں تاحال کرفیو نافذ ہے اور علاقے فوج کے حوالے ہیںجبکہ فوج کو قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو دیکھتے ہی گولی مارنے کا حکم دیاگیاہے، بھارتی میڈیاکے مطابق ہندو بنیاد پرستوں کے حملوں میں شہید ہونے والے مسلمانوں کی تعداد50ہوگئی ہے،کوکراجھارکے ایک گاو¿ں سے مزید آٹھ مسلمانوں کی لاشیں ملی ہیں ،شہید کیے جانے والوں میں تین بچیاں اور دو خواتین شامل ہیں،بھارتی ریاست آسام کے مسلم کش فسادات سے متاثرہ علاقوں میں کرفیو نافذ ہے اور علاقے فوج کے حوالے ہیںجبکہ فوج کو قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو دیکھتے ہی گولی مارنے کا حکم ہے،پولیس انسپکٹر جنرل ایس این سنگھ نے بتایاکہ تشدد زدہ اضلاع کھوکھرا جھاڑ اور بکسا میں غیر معینہ مدت کے لیے کرفیو نافذ کرنے کے ساتھ ساتھ پولیس کو موقع پر گولی مارنے کے احکامات بھی دے دیے گئے ہیں،بھارت کے وزیر داخلہ سشیل کمار شندے نے میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ شدت پسندوں کی تلاش جاری ہے ،اس علاقے میں مسلمانوں اور مقامی بوڈو قبائل کے درمیان زمین کے تنازعات ہیں،غیرملکی خبر رساں کے مطابق تمام تر سیکورٹی کے باوجود ہندو بنیاد پرست مسلمانوں کو نشانہ بنارہے ہیں۔

مزید : عالمی منظر