’برگر مالکان ‘کے خلاف بین الاقوامی احتجاج

’برگر مالکان ‘کے خلاف بین الاقوامی احتجاج
’برگر مالکان ‘کے خلاف بین الاقوامی احتجاج

  

نیویارک (بیورورپورٹ) دنیا بھر میں پھیلی ہوئی فاسٹ فوڈ کمپنیوں کا کاروبار اتنا پھیل چکا ہے کہ بڑے بڑے ترقی یافتہ دارالحکومتوں سے لے کر چھوٹے چھوٹے دور دراز شہروں تک آپ کو میکڈونلڈز، کے ایف سی اور ڈومینوز کمپنیاں برگر، پیزا اور اسی طرح کی دیگر فاسٹ فوڈ بیچتی نظر آتی ہیں۔ ان کمپنیوں کی کمائی اور منافع بھی آسمان کو چھورہا ہے مگر جب بات ہو اپنے ملازمین کو تنخواہیں دینے کی تو یہ کمپنیاں بالکل بھی فاسٹ نظر نہیں آتیں۔ یہی وجہ ہے کہ ان کمپنیوں کے ہزاروں ملازمین نے دنیا کے 32 سے زائد ممالک میں بیک وقت ہڑتال کا منصوبہ بنالیا ہے۔ یہ ملازمین بہتر تنخواہ اور کام کے ماحول میں بہتری کیلے احتجاج کررہے ہیں امریکہ میں ان ملازمین کے حقوق کیلئے قائم کی گئی تنظیم فاسٹ فوڈ فارورڈ نے امریکہ سمیت دنیا بھر میں برگر کنگ، کے ایف سی اور میکڈونلڈز جیسی کمپنیوں کے خلاف مظاہروں کا اعلان کیا ہے۔ فرانس، جاپان، بھارت، بیلجئم، جرمنی، برازیل، ارجنٹینا اور نیوزی لینڈ ان ممالک میں نمایاں ہیں جہاں یہ ملازمین ہڑتال کریں گے.

مزید : تعلیم و صحت