لڑکی پر کتے چھوڑنے کا واقعہ ،حنا پرویز کی اسمبلی میں تحریک التواءجمع

لڑکی پر کتے چھوڑنے کا واقعہ ،حنا پرویز کی اسمبلی میں تحریک التواءجمع

 لاہور(سپیشل رپورٹر) مسلم لیگ (ن) کی ممبر صوبائی اسمبلی حنا پرویز بٹ نے جہیز کے سامان کے حصول کی خاطر نوجوان لڑکی پر پولیس کی موجودگی میں کتے چھوڑنے کے خلاف پنجاب اسمبلی میں تحریک التواجمع کروادی گزشتہ روز جمع کروائی جانے والی تحریک میں کہا گیا ہے کہ میڈیا میں چھپنے والی خبروں کے مطابق سکھیکی کی رہائشی مقبول بی بی کو اس کے خاوند حنیف نے طلاق دے دی تو مقبول بی بی اپنی بیٹی شہربانو اور تین کم سن بیٹوں سمیت محلہ حاجی پورہ میں رہ رہی تھی شہر بانونے روزگار حاصل کرنے کے لیے ایک مل میں نوکری کر لی اور اپنی شادی کا جہیز بنانا شروع کر دیادو ماہ قبل مقبول بی بی کو اس کے سابق خاوند نے دیگر افراد کے ہمراہ نا صرف گھر سے نکال دیا بلکہ شہر بانو کا اپنی شادی کے لیے بنایا گیا جہیز بھی لے گئے شہربانو اپنی والدہ کے ساتھ گزشتہ دو ماہ سے تھانہ سکھیکی میں اپنے جہیز کے حصول کے لیے چکر لگارہی تھی گزشتہ صبح جب لڑکی تھانہ میں پہنچی تو اس کے والد نے رشتے داروں سمیت تھانہ کے باہر پہلے جھگڑا کیا اور جب شہربانو تھانہ میں داخل ہوئی تو اسے مارنا شروع کردیا اور اس پر پولیس کی موجودگی میں کتے چھوڑ دیے جس پر لڑکی بے ہوش ہو گئی جبکہ اسے متعدد زخم بھی آئے جسے ہسپتال پہنچادیا گیایہ ایک انتہائی دل ہلا دینے والا واقعہ ہے کہ ایک لڑکی جو مل میں محنت مزدوری کر کے اپنی ماں کا ہاتھ بٹانے کے ساتھ ساتھ اپنے معصوم بھائیوں کا پیٹ بھی پال رہی تھی کو تشدد کا نشانہ بنایا گیاانصاف کے حصول کے لیے جب لڑکی تھانہ پہنچی تو بجائے اس کے تھانے والے اس کی داد رسی کرتے پولیس کی موجودگی میں ملزمان نے نہ صرف لڑکی پر تشدد کیا بلکہ اس پر کتے چھوڑ دئیے اس واقعہ سے پنجاب بھر کے عوام میں شدیدبے چینی اور اضطراب پایا جاتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1