سپریم کورٹ کا الیکشن کمیشن سے15روز میں جواب طلب

سپریم کورٹ کا الیکشن کمیشن سے15روز میں جواب طلب

                                   اسلام آباد ( اے این این ) سپریم کورٹ نے انگوٹھوں کے نشانات کی تصدیق سے متعلق تحریک انصاف کی درخواست پر الیکشن کمیشن سے 15روز میں جواب طلب کرلیا ۔جمعرات کو سپریم کورٹ میں انگوٹھوں کے نشانات کی تصدیق سے متعلق تحریک انصاف کی درخواست کی سماعت چیف جسٹس تصدق حسین جیلانی کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی ۔ دوران سماعت تحریک انصاف کے وکیل حامد خان نے موقف اختیار کیا کہ انتخابی اصلاحات کے عدالتی فیصلے پر عملدرآمد نہیں ہوا۔ انتخابی اصلاحات کے فیصلے کو الیکشن کمیشن نے ہوا میں اڑا دیا ۔ حامد خان نے کہا کہ الیکشن میں دھاندلی کے حوالے سے علیحدہ درخواست دے رکھی ہے ، جسٹس عظمت سعید نے اپنے ریمارکس میں کہاکہ الیکشن کمیشن کا جواب آنے پر تمام سوالات کے جوابات مل جائیں گے ۔ چیف جسٹس نے قرار دیا کہ دونوں درخواستوں کی سماعت ایک ساتھ ہوگی۔عدالت نے تحریک انصاف کی درخواستوں پر الیکشن کمیشن سے پندرہ روز میں جواب طلب کر لیا۔سماعت کے دوران عمران خان ،شاہ محمود قریشی، شیریں مزاری اور تحریک انصاف کے دیگر رہنما بھی کمرہ عدالت میں موجود تھے ۔سپریم کورٹ میں پیشی کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا ہے کہ عام انتخابات میں دھاندلی کے ذمہ داران کو سزا نہ ملی تو اگلے الیکشن میں حصہ لینے کا کوئی فائدہ نہیں،ہمارا احتجاج اصلاحات کے لئے ہے،غلطیوں کی نشاندہی ضروری ہے تاکہ آئندہ ان کو دھرایا نہ جائے،2002کے الیکشن کو چھوڑیں اس سے پہلے کبھی آزاد عدلیہ کی نگرانی میں انتخابات نہیں ہوئے۔ انھوں نے کہا کہ ہم نے چار حلقوں میں ووٹوں کی تصدیق کےلئے کہا ہے تاکہ پتہ چل جائے کہ الیکشن میں دھاندلی کیسے ہوئی ہم انتخابی عمل میں اصلاحات چاہتے ہیں تاکہ آئندہ الیکشن صاف و شفاف ہوسکیں ۔عمران خان نے کہاکہ جاوید ہاشمی کی قومی اسمبلی میں بڑی کلیئر تقریر ہے متن سے ہٹ کر کوئی چیز نہ لی جائے ۔

 سپریم کورٹ

مزید : صفحہ اول