غداری کیس، ایف آئی اے کو تحقیقاتی رپورٹ 14مئی تک فراہم کرنے کا حکم

غداری کیس، ایف آئی اے کو تحقیقاتی رپورٹ 14مئی تک فراہم کرنے کا حکم

                                 اسلام آباد(آئی این پی)خصوصی عدالت نے وفاقی تحقیقاتی ادارے(ایف آئی اے ) کو غداری کیس میں سابق صدر پرویز مشرف کو تحقیقاتی رپورٹ سمیت تمام دستاویزات 14 مئی تک فراہم کرنے کا حکم دیدیا۔جمعرات کو غداری کیس کی 40 ویں سماعت جسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں جسٹس طاہرہ صفدر اورجسٹس یاور علی خان پر مشتمل خصوصی عدالت کے بنچ نے کی۔ سابق صدر کے وکلا نے ایف آئی اے کی رپورٹ فراہم کرنے کی درخواست کی تھی۔ عدالت نے ایف آئی اے کی تفتیش کا ریکارڈ فراہم کرنے سے متعلق ملزم پرویز مشرف کے وکیل بیرسٹر فرو غ نسیم اور استغاثہ کی ٹیم کے سربراہ اکرم شیخ ایڈدوکیٹ کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔ خصوصی عدالت نے غداری کیس میں پرویز مشرف کی جانب سے دائر درخواست منظور کرتے ہوئے ایف آئی اے کو کیس کے حوالے سے تحقیقاتی رپورٹ سمیت تمام دستاویزات فراہم کرنے کا حکم جاری کر تے ہوئے کہا کہ وکلا صفائی کوتحقیقاتی رپورٹ ودیگرتفصیلات دینااستغاثہ کی قانونی ذمے داری ہے، فیصلے میں یہ بھی کہا گیا کہ تحقیقات کے دوران اگر کسی فرد نے کوئی اضافی نوٹ بھی لکھا ہے تو وہ بھی پرویز مشرف کے وکلاءکو فراہم کیا جائے تاکہ 22 مئی سے کیس کے حوالے سے شہادتیں اکٹھی کرنے کا عمل شروع کیا جا سکے۔واضح رہے کہ پرویز مشرف کے وکیل بیرسٹر فروغ نسیم نے غداری کیس کے حوالے سے ایف آئی اے کی تحقیقاتی رپورٹ سمیت تمام ریکارڈ پرویز مشرف کو فراہم کرنے کی درخواست دائر کر رکھی تھی

 غداری کیس

مزید : صفحہ اول