خواجہ سعد رفیق کی قومی اسمبلی میں تقریر حکومتی صفوں میں بوکھلا ہٹ کا نتیجہ ہے

خواجہ سعد رفیق کی قومی اسمبلی میں تقریر حکومتی صفوں میں بوکھلا ہٹ کا نتیجہ ہے

اسلام آباد( اے این این ) تحریک انصاف نے وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کی جانب سے قومی اسمبلی میں حقائق کے منافی تقریر کے ذریعے ایوان اور قوم کو گمراہ کرنے کی شدید مذمت کی اور اسے حکومت کی صفوں میں موجود بوکھلاہٹ کانتیجہ قرار دیا ہے۔ تحریک انصاف کے سیکرٹری جنرل جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ گیارہ مئی کو دھاندلی کے خلاف تحریک انصاف کے احتجاج نے حکمرانوں کی نیندیں حرام کر رکھی ہیں اور وہ بوکھلاہٹ کے عالم میں پارلیمان جیسے مقدس ایوان میں گمراہ کن حقائق کے ذریعے اپنے مقاصد کی تکمیل چاہتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکزی سیکرٹری اطلاعات ڈاکٹر شیریں مزاری کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ قومی اسمبلی میں سعد رفیق کی جانب سے الزامات مسترد کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما نے کہا این اے 154کے حوالے سے پیش کی گئیں معلومات یکسر غلط ہیں۔ انہوں نے واضح کیا انگوٹھوں کے نشانات کے ذریعے نتائج کی جانچ کے خلاف ان کی درخواست کا دعوی بالکل بے بنیاد اور جھوٹ پر مبنی ہے جبکہ اس کے برعکس انہوں نے 3جولائی 2013کو خاص طور پر انگوٹھے کے نشانات کے ذریعے ہی نتائج کی جانچ کی درخواست کی جس پر کارروائی ہونا باقی ہے۔ مرکزی سیکرٹری اطلاعات ڈاکٹر شیریں مزاری نے سپیکر قومی اسمبلی کے جابندارانہ رویے کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ سپیکر نے مسلم لیگ نواز کے ساتھ ساز باز کے ذریعے تحریک انصاف کی قیادت کو ایوان میں تقریر کے موقع سے محروم کیا۔ ایک سوال کے جواب میں تحریک انصاف کے رہنماؤں نے بتایا کہ حکومت 11مئی کے احتجاج سے مکمل طور پر بوکھلاہٹ کا شکار ہے اور طرح طرح کی رکاوٹیں کھڑی کرنے کی کوششیں کر رہی ہے تاہم تحریک انصاف کے کارکنان تمام رکاوٹیں عبور کریں گے اور اسلام آباد میں ایک جم غفیر کی صورت جمع ہوں گے۔

مزید : صفحہ آخر