سٹیل مل کے 26 فیصد حصص فروخت کریں گے، کوئی ملازم نہیں نکالیں گے:وفاقی وزیر صنعت

سٹیل مل کے 26 فیصد حصص فروخت کریں گے، کوئی ملازم نہیں نکالیں گے:وفاقی وزیر صنعت
سٹیل مل کے 26 فیصد حصص فروخت کریں گے، کوئی ملازم نہیں نکالیں گے:وفاقی وزیر صنعت

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر صنعت غلام مرتضیٰ خان جتوئی نے کہا ہے کہ پاکستان سٹیل کے بھی 26 فیصد شیئرز فروخت کئے جائیں گے تاہم کسی بھی ملازم کو نوکری سے نہیں نکالا جائے گا۔ حکومت 5 سالہ صنعتی پالیسی کو حکومتی شکل دے رہی ہے اور یہ پالیسی صنعتی برادری کی امنگوں کے مطابق ہوگی جس سے ملکی ترقی کی راہیں کھلیں گی۔ ایف پی سی سی آئی میں تاجروں اور صنعتکاروں سے خطاب کے دوران وزیر صنعت نے کہا ہے کہ پاکستان سٹیل ملز کیلئے 18 ارب روپے کے بیل آﺅٹ پیکج کی منظوری سے آئندہ 6 ماہ کے دوران پیداوار میں 75 فیصد اضافہ متوقع ہے۔ ماضی کی حکومت میں مجموعی طور پر پاکستان اسٹیل کو ملنے والے 40 ارب روپے کے پیکج خورد برد ہوگئے مگر موجودہ حکومت کی جانب سے ملنے والے 18 ارب روپے کے پیکج سے پاکستان سٹیل آئندہ 6 ماہ میں منافع کمانا شروع کردے گی جس کے بعد پی آئی اے کی طرح پاکستان سٹیل کے بھی 26 فیصد شیئرز فروخت کئے جائیں گے پاکستان سٹیل کی مینجمنٹ کو بہتر بنایا جارہا ہے اور اس کی دگنی توسیع کرنے پر توجہ دی جارہی ہے۔ہم اس اہم ادارے کی پیداوار ڈیڑھ ملین میٹرک ٹن سے بڑھا کر 3 ملین میٹرک ٹن سالانہ منافع میں لائیں گے۔ پاکستان سٹیل سے کسی بھی ملازم کو نوکری سے نہیں نکالا جائے گا۔ حکومت کسی کی بھی روزی پر ضرب لگانے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتی۔ ملک بھر میں ایک ہزار نئے یوٹیلٹی سٹورز کھولے جائیں گے جن میں 250 سٹورز سند میں کھلیں گے۔ قطر سے ایل این جی کی درآمد 10 ماہ کے اندر شروع ہوجائے گی جبکہ گڈانی میں ایل این جی جیٹی لگائی جارہی ہے، توانائی کا بحران 4 سال میں حل ہوجائے گا جس سے ملکی ترقی کی نئی راہیں کھلیں گی۔

مزید : بزنس