دولت نے ’ہنی مون‘ بھی نہ ہونے دیا

دولت نے ’ہنی مون‘ بھی نہ ہونے دیا
دولت نے ’ہنی مون‘ بھی نہ ہونے دیا

  

میامی (نیوزڈیسک) مال و زر کی ہوس انسان کو درندہ بنادیتی ہے اور وہ وحشی ہوکر کسی معصوم کی جان لینے سے بھی دریغ نہیں کرتا لیکن اس شخص کی ہوس زر کا کیا عالم ہوگا کہ جو دولت کے لالچ میں اپنی شریک حیات کی ہی جان لے لے.امریکی ریاست فلوریڈا کے مائیکل ایسکوٹو کی 21 سالہ وینڈی لڑاپا گا سے شادی کو ابھی چار دن ہی ہوئے تھے کہ اس ظالم شخص نے 10 لاکھ ڈالر انشورنس کی رقم حاصل کرنے کیلئے تشدد کرکے اپنی ہی بیوی کی جان لے لی۔ یہ بے حس شخص جب اپنی نئی نویلی دلہن کو ہنی مون کیلئے لے کر روانہ ہوا تو بیچاری کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا کہ یہ اس کی زندگی کا آخری سفر ہے۔ اس نے پہلے نشہ اور مشروب پلا کر وینڈی کو ہلاک کرنے کی کوشش کی لیکن مشروپ کے متعلق شک ہوجانے کی وجہ سے وینڈی بچ گئی۔ پھر اس شخص نے اسے ڈبو کر مارنے کی کوشش کی لیکن زیرادہ دیر زیر آب نہ رکھ سکنے کی وجہ سے کامیاب نہ ہوا اور پھر اسی رات مائیکل نے ٹائر کھولنے والے لوہے کی سلاخ سے پے درپے وار کرکے اپنی بیوی کو ہلاک کردیا۔ اپنے اس ظلم اور ہوس کے نتیجے میں اس مجرم کو دولت تو کیا حاصل ہوتی الٹا پوری زندگی جیل کی سلاخوں کے پیچھے گزارنی پڑے گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس