9ماہ کے دوران حکومت کو 18ارب ڈالر موصول ادائیگیوں کے بعد 1.4ارب کی بچت

9ماہ کے دوران حکومت کو 18ارب ڈالر موصول ادائیگیوں کے بعد 1.4ارب کی بچت

 اسلام آباد(اے پی پی) عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں کمی اور بیرون ملک سے موصول ہونے والے ترسیلات زر کے باعث جاری مالی سال کے پہلے نو مہینوں میں جولائی تامارچ2015-16ء کے دوران تجارتی، کرنٹ اکاؤنٹ سمیت دیگرمختلف بجٹ خساروں پر قابو پا لیا گیا ہے جبکہ اس عرصہ کے دوران حکومتی خزانے میں18.1 ارب ڈالر کی وصولیاں ہوئیں اورحکومت کو مختلف ادائیگیوں کے بعد تقریباً1.4 ارب ڈالرکی بچت ہوئی ہے۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعدادوشمار کے مطابق رواں مالی سال میں پہلے نو مہینوں کے دوران 14.4 ارب ڈالر کی ترسیلات زر موصول ہوئی ہیں جبکہ تیل کے درآمدی بل میں3.7 ارب ڈالر کی بچت ہوئی ہے ۔ رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال کے دوران تیل کے درآمدی بل میں کمی اور ترسیلات زر میں اضافہ کے بعد حکومت کو18 ارب ڈالر سے زائد کی وصولیاں ہوئیں جبکہ تجارتی خسارے، کرنٹ اکاؤنٹ خسارے سمیت مختلف قرضوں کی واجب الادا اقساط کی ادائیگی کے بعد بھی حکومت کو1.4 ارب ڈالر کی بچت ہوئی ہے۔

مزید : کامرس