فائر بندی کے بعد پھر شامی مسلمانوں پر ظلم و ستم انتہائی قابل مذمت ہے، عبدالغفار روپڑی

فائر بندی کے بعد پھر شامی مسلمانوں پر ظلم و ستم انتہائی قابل مذمت ہے، ...

لاہور ( نمائندہ خصوصی) امیر جماعت اہل حدیث پاکستان حافظ عبدالغفار روپڑی نے کہا ہے کہ فائر بندی کے بعد ایک بار پھر شامی مسلمانوں پر ظلم و ستم انتہائی قابل مذمت ہے۔ انبیاء و رسل کی سر زمین شام میں ظلم و بربریت کی انتہا کی جا رہی ہے۔ بے دردی اور سفاکانہ طریقے سے مسلمانوں کا خون بہایا جا رہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز جامعہ دارالقدس چوک دالگراں لاہور میں جماعتی ذمہ داران کے وفد سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ شام کے بے گناہ مسلمانوں پر ہونے والے ظلم و ستم کا عالمی برادری نوٹس لے۔ امریکہ نہتے مسلمان اور معصوم بچوں کو بے دریغ شہید کرنیوالی بشار الاسد حکومت کی پشت پناہی سے باز رہے۔ انہوں نے کہا کہ دشمنان اسلام اپنے مفادات کیلئے دنیا کے ہر کونے پر قتل و غارت کر رہے ہیں۔ عالمی امن کے نام نہاد ٹھیکیداروں کو شام سمیت دیگر مسلم ممالک میں ہمارے معصوم بچوں کا خون نظر نہیں آتا۔ امریکہ کے دوہرے معیار کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسلامی خلافت والی حکومت کے وجود میں آنے کے خوف سے امریکہ نے شام میں مداخلت کا ارادہ کر لیا تاکہ اس خطے میں اسلامی حکومت کا قیام عمل میں نہ آ سکے۔ روس، امریکہ، اسرائیل سمیت دیگر اسلام دشمن طاقتیں اوچھے ہتھکنڈے اپنائے ہوئے ہیں اور مسلمانوں کو زیر کرنے کا کوئی بھی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتے۔ انہوں نے کہا کہ شام میں خواتین، معصوم بچوں اور بے گناہ جوانوں کو سر عام شہید کیا جا رہ اہے لیکن اقوام متحدہ سمیت حقوق انسانیت کی نام نہاد علمبردار دیگر تنظیموں نے گونگے شیطان کا کردار ادا ککا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم ممالک کے سربراہان ہوش کے ناخن لیں اور بے گناہ شامی مسلمانوں کی مدد کیلئے کردار ادا کریں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1