دینی ادارے اسلام کے قلعے اور رشد و ہدایت کے مراکز ہیں،حامد رضا

دینی ادارے اسلام کے قلعے اور رشد و ہدایت کے مراکز ہیں،حامد رضا

لاہور (نمائندہ خصوصی )سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ حامد رضا نے کہا ہے کہ دینی ادارے اسلام کے قلعے اور رشد و ہدایت کے مراکز ہیں۔ مدارس میں انتہا پسندی کا درس دینے والے اسلام اور مسلمانوں کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ علماء مدارس کے طلباء میں امن پسندی کا شعور بیدار کریں۔ مدارس دینیہ کے خلاف امریکہ و مغرب کی کو ئی سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔حکومت تمام مدارس کو بد نام کرنے کے بجائے دہشتگر دی میں ملوث مدارس کے نام قوم کے سامنے پیش کرے۔دینی مدارس کے طلباء جدیدعلوم میں بھی مہارت حاصل کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے عرس محدث اعظم و صاحبزادہ حاجی محمد فضل کریم کے موقع پر جامعہ رضویہ مظہر اسلام کے 69ویں سالانہ ختم بخاری شریف و جلسہ دستار فضیلت سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

جلسہ سے پیر میاں محمد حنفی سیفی، ضیاء المصطفیٰ حقانی، مولانا برھان حیدر، صاحبزادہ حسن رضا، پیر عارف حسین شاہ آف آزاد کشمیر ، صاحبزادہ حسین رضا ، مولانا سعید احمد اسعد، قاری مسعود احمد حسان اور دیگر نے خطاب کیا ۔ اس موقع پر جامعہ رضویہ سے فارغ التحصیل ہونے والے علماء کرام کی دستار بندی بھی کی گئی۔ صاحبزادہ حامد رضا نے مزید کہا کہ کرپٹ نظام کرپٹ مافیا کیلئے ڈھال بنا ہوا ہے۔وزیر اعظم کا جلسے کرنا ان کی کمزوری ظاہر کررہا ہے۔محروم طبقے کو جعلی جمہوریت سے خوابوں کی تعبیر نہیں مل سکتی۔ ضمیر فروشوں نے سیاست و جمہوریت کو یرغمال بنا رکھا ہے۔چیئرمین سنی اتحاد کونسل نے مزید کہا کہ ہمارے وزیر اعظم دولت مندوں کے عالمی کلب کے ممبر بن چکے ہیں۔ بار بار اقتدار میں آنے والوں نے اپنی دولت میں اضافے کے سوا کچھ نہیں کیا۔ کرپٹ نوکر شاہی کا بھی احتساب ہو نا چاہیئے۔پاکستان امریکہ کی بھڑکائی آگ کو بھجانے کیلئے دہشتگردوں سے لڑائی لڑ رہا ہے۔پاکستان نے دہشتگردوں کے خلاف دنیا کی سب سے بڑی جنگ لڑی ہے۔شریف برادران کی سیاست ذاتی مفادات کے گرد گھومتی ہے۔نظام کی تبدیلی کے بغیر بہتر ی کی کو ئی امید نہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4