جس طرح مائیں واجب الاحترام ہیں ان کی زبانیں بھی قابل قدر ہیں ڈاکٹر شریف نظامی

جس طرح مائیں واجب الاحترام ہیں ان کی زبانیں بھی قابل قدر ہیں ڈاکٹر شریف نظامی

لاہور(پ ر) جس طرح مائیں واجب الاحترام ہیں اسی طرح ان کی زبانیں بھی قابل قدر ہیں ۔ یہ نئی نسلوں کا بنیادی انسانی حق ہے کہ انھیں ان کی مادری زبان میں تعلیم دی جائے۔وطن عزیز کی علاقائی اور صوبائی بولیاں قومی زبان اردو کے ساتھ رسم الخط اور کئی دیگر لحاظ سے ہم آہنگ ہیں ۔کتنی حیرت کی بات ہے کہ انگریزی کو جو ایک انتہائی نامانوس زبان ہے ہمارے طلبہ و طالبات پر اول جماعت سے یونیورسٹی سطح کی تعلیم تک مسلط کیا گیا ہے ۔عالمی یوم مادراں کے موقع پر ہمارے حکمرانوں کو بیان دیتے وقت یہ ملحوظ خاطر رکھنا چاہیے کہ ان کے قول و فعل میں تضاد ہے۔انگریزی کسی بھی بچے کی مادری زبان نہیں ہے لیکن اپنے مغربی آقاؤ ں کو خوش کر نے کے لیے اور امداد کے چند سکوں کی خاطر انہوں نے سکولوں،کالجوں اور یونیورسٹیوں میں انگلش میدیم مسلط کر رکھا ہے ۔ان خیالات کا اظہار پاکستان قومی زبان تحریک کے مرکزی صدر اکٹر محمد شریف نظامی نے ماؤ ں کے عالمی دن کے موقع پر اخبارات کو بیان جاری کرتے ہوئے کیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4