روشن پاکستان مارچ کی جھلکیاں

روشن پاکستان مارچ کی جھلکیاں

لاہور( شہزاد ملک) روشن پاکستان مارچ میں شرکت کیلئے سُنّی تحریک کے مقامی عہدیداروں کی قیادت میں مختلف قافلے مقررہ وقت سے قبل ہی داتادربارچوک پہنچنا شروع ہوگئے تھے، ’’ روشن پاکستان مارچ ‘‘ میں سُنّی تحریک کے کارکنوں کے علاوہ اہلسنّت کے کثیرعلماء ومشائخ اورزندگی کے تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے ہزاروں کی تعداد میں شرکت کی۔*۔۔۔ مارچ کے شرکاء بسوں، کاروں،رکشوں اورموٹرسائیکلوں پرسوارتھے لیکن اکثرنے داتادربارسے ہی پیدل مارچ کیا،قائدین کیلئے ایک بڑی گاڑی پر خصوصی اسٹیج تیارکیاگیاتھا،جبکہ شدید گرمی اور چلچلاتی دھوپ کے باوجود شرکاء کا انتہائی نظم و ضبط اورزبردست جوش و خروش دیکھنے میں آیا۔*۔۔۔سربراہ پاکستان سُنّی تحریک محمدثروت اعجازقادری،مرکزی اورصوبائی عہدیداروں کے ہمراہ ایک بڑے قافلے کی صورت میں داتادربار چوک پہنچے جہاں انکاوالہانہ استقبال کیاگیا،ان پرپھولوں کی منوں پتیاں نچھاورکی گئی جبکہ اس موقع پرکارکنان نے زبردست نعرے لگائے،ثروت اعجازقادری نے ہاتھ اُٹھاکرشرکاء کے نعروں کاجواب دیااوروہاں موجود دیگرقائدین اورعلمائے کرام سے ملاقات کی۔*۔۔۔ثروت اعجازقادری دیگرعہدیداروں اورعلماء ومشائخ کے ہمراہ نے داتادربارپرحاضری د ی اورنمازِ ظہرکی ادائیگی کے بعدایک مختصرسی تلاوت ونعت کے بعدتین بجے دعائے خیرکیساتھ روشن پاکستان مارچ کاآغازکیاگیا۔*۔۔۔روشن پاکستان کاعزم لیے ہزاروں لوگ،بچے ،بزرگ اور جوان،وکلاء ،صنعت کار ،تاجر سڑکوں پرنکل آئے،وہ وقفے وقفے سے نعرہ ہائے تکبیرورسالتؐ،دہشت گردی نامنظور، کرپشن نامنظور،گونوازگو،پاک فوج زندہ زندہ باد، امریکہ کا جویار ہے غدارہے غدار ہے وغیرہ جیسے نعرے لگارہے تھے۔*۔۔۔ریلی کے شرکاء نے اپنے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز بھی اٹھا رکھے تھے جن پر مہنگائی، بے روزگاری، کرپشن ،دہشت گردی وغیرہ کے خلاف نعرے اورمطالبات درج تھے۔*۔۔۔مرکزی گاڑی سے مسلسل تحریکی ترانے گونجتے رہے،جن میں ’’حق بولوحق ‘‘ اور ’’میری جان پاکستان ‘‘ پرشرکاء کاجوش وجذبہ قابل دید تھا۔*۔۔۔روشن پاکستان مارچ میں شریک کارکنان نے تحریکی پرچموں کے ساتھ ساتھ قومی پرچم بھی اٹھائے ہوئے تھے، یوں محسوس ہوتاتھاکہ جیسے سبزپرچموں کی بہارآگئی ہو۔*۔۔۔وقفے وقفے سے مختلف مقررین بھی اپنے ولولہ انگیز خطابات سے شرکاء کے جذبات گرماتے رہے،

مزید : علاقائی