باپ بیٹے سمیت 9افراد ٹریفک حادثات کی نذر، مشتعل افراد نے بس جلا ڈالی

باپ بیٹے سمیت 9افراد ٹریفک حادثات کی نذر، مشتعل افراد نے بس جلا ڈالی

میاں چنوں،بستی ملوک،کہروڑ پکا،فتح پور ،بھکر ، منکیر ہ،ڈاہرانوالہ،چنی گوٹھ(نمائندگان)ٹریفک حادثات میں2خواتین،بچے اور باپ بیٹے سمیت 9افراد زندگی کی بازی ہار گئے،مشتعل افراد نے بس کو آگ لگا دی۔بارات کی کار کو حادثہ کے نتیجہ میں متعدد افراد زخمی ہوگئے۔اس سلسلے میں میاں چنوں سے نمائندہ خصوصی،نمائندہ پاکستان کے مطابق میاں چنوں کے نواحی گاؤں45پندرہ ایل کے قریب تیزرفتار ٹرالر اور موٹر سائیکل میں تصادم کے نتیجہ میں موٹر سائیکل پرسوار22سالہ نوجوان محمد بوٹا موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا ،جبکہ دوسرا شخص شدید زخمی ہوگیا،ریسکیو1122نے زخمی کو فسٹ ایڈ کے بعد ٹی ایچ کیومیاں چنوں شفٹ کردیا ،حادثہ کاشکار ہونیوالوں کا تعلق نواحی گاؤں16.14Lسے تھا۔میاں چنوں کے نواحی گاؤں20.8BRکا رہائشی محمد وقاص ولد محمد شریف جو سعودی عرب میں کار ڈرائیور کی نوکری کرتا تھا،گزشتہ روز ٹریفک حادثہ میں جا ں بحق ہوگیا،مرحوم کی تین ماہ قبل شادی ہوئی تھی۔ بستی ملوک سے نمائندہ پاکستان کے مطابقمطابق بستی فرید والی کا رہائشی محمد اسماعیل اپنی بیوی شریفاں بی بی ۔بیٹی آسیہ اور دوسالہ نواسے عبدالرحمان کے ہمراہ موٹر سائیکل پر خریداری کی لئے بستی ملوک آرہے تھا بستی ملوک چوک سے چند قدم کے فاصلے پر جٹ کر یانہ سٹور کے سامنے ایک ٹرالی سامان اتار رہی تھی ٹرالی کو رکشہ کراس کرنے کے دوران موٹر سائیکل نے بھی ٹرالی کو کر اس کرنے کی کوشش کی اور رکشہ کی سائیڈ لگنے سے موٹر سائیکل اور تمام موٹر سائیکل سوار روڈ پر گر گئے اور پیچھے سے ٹرالر نمبر TLB 122نے محمد اسماعیل ۔شریفاں زوجہ محمد اسماعیل ۔بیٹی آسیہ زوجہ امتیاز اور دو سالہ نواسہ عبدالرحما ن ولد امتیاز کو کچل دیا محمد اسماعیل اور نواسہ عبدالرحما ن موقع پر جاں بحق ہوگئے جبکہ شریفاں بی بی اور آسیہ بی بی شدید زخمی ہوگئیں زخمی خواتین کو فوری طور پر نشتر ہسپتال منتقل کر دیا گیا دونوں زخمی خواتین تاحال موت اور زندگی کی کشمکش میں ہیں جاں بحق ہونے والامحمد اسماعیل انتہائی غریب محنت کش آدمی تھا اور اس کی پانچ بیٹیاں اور دو بیٹے ہیں اور وہ اپنے خاندان کا واحد کفیل تھا ۔کہروڑ پکا سے نمائندہ خصوصی کے مطابقگزشتہ روز اللہ یار اپنی بیوی سکھوں مائی اور قریبی رشتہ دار عورت کے ہمراہ رات کے وقت گھر جا رہے تھے کہ بستی جھلاری عیدگاہ چوک کے قریبسامنے سے آنے والی کار نے موٹر سائیکل کو ٹکر مار دی جس کے نتیجہ میں اللہ یار اور اس کی بیوی وغیرہ شدید زخمی ہو گئے جن کو فوری طور پروکٹوریہ ہسپتال بہاول پور پہنچا یا گیا لیکن سکھوں مائی زخموں کے تاب نہ لاتی ہوئی دم توڑ گئی جبکہ اس کے خاوند کی ٹانگیں توٹ گئی اور ان کی ساتھی مہراں مائی بھی شدید زخمی ہو گئی وہ دونوں ابھی تک ہسپتال میں داخل ہیں جن کی حا لت خطرے سے با ہر بتائی جا رہی ہے۔ فتح پور سے سٹی رپورٹر کے مطابقنواحی گاؤں چکنمبر220/ TDAکے جعفر حسین نے بتا یا کہ و ہ کیری ڈبہ پر اپنی گھریلو خواتین کے ہمراہ جا رہا تھا کہ نہڑ انڈس کینال کروڑ روڈ کے پل پر اسکی والدہ مسماۃ سداں ما ئی پانی پینے کیلئے اتری جسے سڑک کراس کر تے ہوئے ایک تیز رفتار کار جسے وارڈ نمبر آٹھ8فتح پور کا رہائشی ابوالحسن گجر چلا رہا تھا اور ساتھ اسکے ساتھ مہدی حسن گجر بھی مو جود تھا نے ٹکر مار دی جس سے وہ شدید زخمی ہو گئی اور ہسپتا ل جا کر جاں بحق ہو گئی، مدعی کے مطابق ابوالحسن موقعہ سے فرار ہو گیاجبکہ مہدی حسن کو کچھ دیر بعد دو نا معلوم افراد ایک کار نمبر 9770/LECمیں آکر لے گئے،فتح پور پولیس نے مدعی کی درخواست پر دونوں مذکورہ اور دو نامعلوم سمیت چار افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔ منکیرہ،بھکر،فتح پور سے نامہ نگار ،سٹی رپورٹر کے مطابقگزشتہ روز نوتک کے رہائشی محمد اقبال بلوچ اپنے بارہ سالہ بیٹے کے ہمراہ موٹرسائیکل پر سوار ہو کر فتح پور جا رہے تھے کہ اڈا214ایم ایم روڈ پر سامنے سے آنے والی رانا جہانزیب کی مسافر بس نے اوورٹیک اور غفلت لاپرواہی کا مظاہرہ کرتے ہوئے موٹر سائیکل سوار دونوں باپ بیٹا کو کچل ڈالا جسکے نتیجہ میں دونوں باپ بیٹا محمد اقبال اور فخر عبا س موقع پر جاں بحق ہو گئے موقع پر کھڑے مشتعل افراد نے گاڑی کو آگ لگا دی اور ایم ایم روڈ بلاک کر کے سخت احتجاج کیا ڈرائیور موقع سے فرار ہو گیا اطلاع ملتے ہی پیٹرولنگ چیک پوسٹ آصف پل ،پولیس تھا نہ منکیرہ اور ریسکیو1122کی ٹیمیوں نے موقع پر پہنچ کر کنٹرول سنبھالا اور ٹریفک بحال کرائی اور مشتعل افراد کو منتشر کیا پولیس تھا نہ منکیرہ نے دونوں لاشوں کو قبضہ میں لے کر پوسٹ مارٹم کیلئے ٹی ایچ کیو ہسپتال منکیرہ پہنچایا حادثہ اس قدر شدیدتھا کہ نعشوں کی پہچان کرنا مشکل ہو رہا تھا حادثہ بس ڈرائیو ر کی غفلت لاپرواہی اور تیز رفتاری کے باعث پیش آیا۔ڈاہرانوالہ سے نامہ نگار کے مطابق ڈاہرانوالہ فورٹ عباس روڈ پہ چک نمبر 432/6R کے نزدیک ڈاہرانوالہ فورٹ عباس سے آنے والی براتیوں کی کار اچانک سامنے سے آنے والی پک اپ جو کہ فورٹ عباس جا رہی تھی دونوں آپس میں خوفناک طریقے سے ٹکرا گئیں۔جس سے دونوں گاڑیوں میں سوار متعدد مسافر شدید زخمی ہو گئے جن میں ایک ہی خاندان کے ماں بیٹا ،بیٹی اور اسکا خاوند شدید ذخمی ہو گئے جن کو فوری طور پر ڈاہرانوالہ کے سرکاری ہسپتال میں لے جایا گیا لیکن بار دانہ لانے والی ٹرالیوں کی لمبی لائنوں کی وجہ سے سرکاری ہسپتال کو جانے والا واحد رستہ بلاک تھا جس کی وجہ سے شدید زخمی مسافر ایمبولینسوں میں تڑپتے رہے۔جس پر عوام نے شدید احتجاج کیا اور حکومت سے مطالبہ کیا کہ ڈاہرانوالہ غلہ گودام کو الگ روڈ بنایا جائے اور سرکاری ہسپتال کو جانے والا روڈ از سر نو پختہ کیا جائے تاکہ شدید زخمی مسافروں کو طبی امداد کے حصول میں دشواری کا سامنا نہ کرنا پڑے۔چنی گوٹھ سے نامہ نگار کے مطابق چک 55عباسیہ کا رہائشی شخص پر ویز بو ہڑ پل عباسیہ لنک کینال کے قر یب مقامی ہو ٹل سے کھا نا کھا نے کے بعد سڑک عبور کر رہا تھا کہ منی ٹرک نے اس کو ٹکر ماردی جس کے نتیجہ میں پرو یز بوہڑ شدید زخمی ہو گیا ۔اس کو بی وی ایچ بہاولپور لے جا یا جا رہا تھا کہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہو ئے جا ں بحق ہو گیا۔ جبکہ ٹرک ڈرائیور موقع سے فرار ہو گیا ۔ لیا قت پور صدر پو لیس نے کا روائی شروع کر دی ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر