باپ بار بار مذہب تبدیل کررہا ہے ،بیٹی اندراج مقدمہ کے لئے ہائی کورٹ پہنچ گئی ،ایڈووکیٹ جنرل معاونت کے لئے طلب

باپ بار بار مذہب تبدیل کررہا ہے ،بیٹی اندراج مقدمہ کے لئے ہائی کورٹ پہنچ گئی ...
باپ بار بار مذہب تبدیل کررہا ہے ،بیٹی اندراج مقدمہ کے لئے ہائی کورٹ پہنچ گئی ،ایڈووکیٹ جنرل معاونت کے لئے طلب

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے بار بار مذہب تبدیل کرنے والے باپ کے خلاف بیٹی کی جانب سے اندراج مقدمہ کی درخواست پر ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو عدالتی معاونت کے لئے طلب کر لیاہے۔جسٹس کاظم رضا شمسی نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ مذہب تبدیل کرنے والے کو اسلام میں مرتد کہا گیا ہے جس کی سزاءموت ہے ،عدالت کو اس حوالے سے موجود ملکی قانون سے متعلق آگاہ کیا جائے۔عدالت میں سماعت شروع ہوئی تودرخواست گزار انیلہ سلیم کے وکیل آفتاب باجوہ نے موقف اختیار کیا ہے کہ درخواست گزار کے باپ سلیم نذیر نے عیسائیت کو ترک کر کے اسلام قبول کیا جبکہ رضیہ بی بی نامی مسیحی خاتون کو بھی مسلمان کیا اور اس سے شادی کر لی،شادی کے کئی برس بعد خاتون فوت ہوئی تو اس نے اپنی بیوی کو مسیحی رسومات کے ساتھ مسیحی قبرستان میں دفن کر دیا جبکہ اس کے بعد تیسری شادی بھی ایک مسیحی عورت کو مسلمان کر کے کی مگر اب خود کو مسیحی ظاہر کر رہا ہے،انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ بار بار مذہب تبدیل کرنے پر درخواست گزار کے باپ کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا جائے،عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ مذہب تبدیل کرنے والے کو اسلام میں مرتد کہا گیا ہے جس کی سزاءموت ہے ،عدالت کو اس حوالے سے موجود ملکی قانون سے متعلق آگاہ کیا جائے،عدالت نے کیس کی مزید سماعت 25مئی تک ملتوی کرتے ہوئے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو عدالتی معاونت کے لئے طلب کر لیاہے۔

مزید : لاہور